13.03.2019

جیش محمدئ سربراہ مسعود اظھر آ عالمین دھشت گردئ نام دیگئ مسئلہ یک وارئ دیگہ بہ بین الاکوامین کونسلئ سیکورٹی کونسل تھا دیما بوتگیت۔ اصلین ھبر ایش انت کہ رندا شہ پولوامہ ھلگر آ، آمریکہ، برطانیہ و فرانس بہ سیکورٹی کونسل تھا ای لوٹگا دیما کرتنت کہ باید انت کہ پہ مسعود اظھر عالمین دھشت گردئ نام داتگ بیت۔ ای لوٹگ یک سَکین بنیادئ ھم داشت، پہ چہ کہ جیش محمد وتی ای ھلگرئ ذمہ زورتت۔ نون ای لوٹگ بہ سیکورٹی کونسل تھا پہ پٹ و پول آ دیما بیگا انت۔ دیم شہ ایشی سہ وار ای وڑئ لوٹگ دیما بوتنت و ھر وار چین ایش را ویٹو کرتت۔ نون مُچی چمبراہ انت کہ گیندنت ای واری چین بہ چی مواقفئ انت۔ تہ نون شہ چینئ نیمگا ای وڑئ گجام اشارہ نہ رستگیت کہ شہ آی کچانہ جتگ کننت کہ ا شہ ای لوٹگا نیمہ داری کنت و یا بہ ایشی حلاپا انت۔

شہ چینئ نیمگا ای وڑئ گجام اشارہ نہ رستگیت کہ شہ آی کچانہ جتگ کننت کہ ا شہ ای لوٹگا نیمہ داری کنت و یا بہ ایشی حلاپا انت۔
تہ جائ کہ پولوامہ ھلگرئ ھبر انت، شہ ایشی ھمی ھبر درا بوتگیت کہ تہ نون بہ ای ھلگرئ بدگشی آ چین گون عالمین براسداری آ یکجا بوتہ۔ ھما بیانئ کہ بین الاکوامین کونسل بہ ای ھلگرئ بدگشی آ دیما کرت بہ آی تھا چینئ رضامندی ھم ھور ات۔ رندا شہ آی بہ چین، ھند و روسیہ ڈنئ کارانی وزیرانی دیوانئ تھا ھم چینئ ڈنئ کارانی وزیر ای ھبرا گشتنت کہ بہ دھشت گردیئ بھرا شہ ھما مقامات آن کہ دھشت گرد شہ آوان کٹ گرنت بہ آوانی حلاپا باید انت کہ سَکین گام زورتگ بیت۔ چین بری بھرا ھم کوشست داریت کہ بہ ھندوستان و پاکستانئ نیاما ای سَکی کہ رادگ انت ای ماحول آ شہ نیام زورگئ بھرا ھم شرّین گام زوریت۔ پورہ ئن وڑئ شہ ای مُچین ھبران ای نتیجہ گپتگ بیت کہ پولوامہ دھشت گردین ھلگر چین آ ھم بہ ھما کچانہ ناپسند ات کہ دیگہ مُلکانا پسند بوتہ مگہ بہ مسعود اظھرئ عالمین دھشت گردئ نام دیگئ مسئلہ بھرا آی مواقف چی انت بہ آی باروا نون گجام چیزئ گشتگ نہ کننت۔ بہر حال بیدئ ایشی کہ چین بری مسئلہ سرا چی وڑئ پکر و حیال داریت پاکستان باید انت کہ وت پکر کنت کہ شہ دھشت گردیئ وجا پاکستان پورہ ئن عالمین براسدارئ تھا تھانکا منتگیت۔ پاکستانئ ھر موسمئ دوست چین اگہ گون مسعود اظھرئ عالمین دھشت گردئ نام دیگئ لوٹگا تپاک ھم مہ کنت ای بری معنا نہ انت کہ آ شہ ای ھبرا نیمہ داری کنت کہ شہ پاکستانئ سرڈگارا بہ دھشت گردیئ بھرا کٹ گپتگ بیت۔
یا ای ای پالسی آ شرّ پکر کنت کہ شہ آی کٹ گپتہ بہ ھم پلّین مُلکانی تھا آ دھشت گردی آ دیمرئی دنت۔ ای ھبرا پاکستانئ جیند باید انت کہ محسوس کنت کہ ایشی وج چی انت کہ بہ عالمین براسدارئ تھا بہ پاکستانئ بھرا دھشت گردیئ وجا عامین بیزارئ ماحول رادگ انت۔ نون بہ گئوستگین فرورئ ماہ ایف اے ٹی ایف ب پیرس تھا ای ھبرئ سرا وتی تشویش آ درا کرت کہ پاکستان بہ پول شودیی و ممنوعہ ئن دھشت گردین ڈلانی موشکولی و فنڈنگ حلاپا شرّین گام نہ زورتگیت، شہ ایف آے ٹی ایف نیمگا وارننگ ھم داتگ بوت کہ اگہ پاکستان شرّین کاروائی مہ کنت آی را بہ سیائن لسٹ تھا ھم شامل کرتگ کننت۔
ای ھبر ھم درا بوتگیت کہ پاکستانئ اکتسادین سکرٹر کہ بہ ایف آے ٹی ایف دیوانانی تھا موجود بوتگنت بہ وتی مُلکئ تھا ای ھبرئ سرا سَک بوتگنت کہ پاکستان باید انت کہ بہ دھشت گردین ڈلانی فنڈنگ و اکتسادین دیگ و گرگ موشکولیانی سرا شرّین وڑئ وتی چما سَک کنت و پہ ایشانی اوشتارینگا شرّین گام زوریت اگہ نہ پاکستان بہ آیوکین وھدہ اکتسادین وڑئ ٹپ گیندیت۔ بہ ھمی وھدان پاکستان بہ ممنوعہ ئن دھشت گرد و دھشت گردین ڈلانی حلاپا چُنت گام زورتگیت و شہ ای گام گرگان دیم بہ ای ھبرا اشارہ بیت کہ پاکستان شہ عالمین براسدارئ بیزاری آ سی انت ۔
مختصر ایش انت کہ پاکستان نون بہ جاگہ رستگیت کہ باید انت کہ فیصلہ کنت کہ وتی روایتی پالسی آ بدلینگا بیت یا کہ شہ پورہ ئن عالما یک نیمگ بیت و بہ آی قناعت کنت۔ ای ھبرا پاکستانئ مُچین حلقہ باید انت کہ محسوس کننت۔ شہ سیاسین قیادت آ گپتہ، پوج، ایجنسی ریاست و دیگہ دپتر و شہ مُچان اھمتر آ مُلکئ استمان ھم باید انت کہ بری بھرا پکر کننت کہ گون نونین صورتحال آ پاکستان فیصلہ کن ئن گام زورتن آ مجبور کنت یا نہ۔