ریڈیو فیچر:شاید کبھی خوابوں میں ملیں

PART – 1

PART – 2

ahmad-faraz

احمد فراز

جدید دور کے کم ہی ایسے شاعر ہیں جنہیں احمد فراز جیسی مقبولیت نصیب ہوئی۔ احمد فراز نے بابا نیاز حیدر سے بہت کچھ سیکھا اور ریڈیو سے بھی۔ پہلا تقرر کراچی ریڈیو میں اسکرپٹ رائٹر کے طور پر ہوا پھر فراز ہوم ٹاؤن پشاور چلےگئے وہاں اس وقت نون میم راشد ڈائریکٹر تھے۔ انہوں نے فراز کی کافی رہنمائی کی اور احمد فراز پرڈویوسر ہوگئے۔ایم اے کرنے کے بعد احمد فراز کو یونیورسٹی میں لیکچر شپ مل گئی لیکن کچھ عرصے بعد انہوں نے وہ چھوڑ دی۔ جلد ہی وہ نیشنل سینٹر کے ڈائریکٹر بن گئے۔ احمد فراز نے زندگی میں کچھ زیادہ ہی نشیب و فراز دیکھے وہ اکثر کہا کرتے تھے کہ وہ اپنی شاعری کی وجہ سے جیل گئے اور جلا وطن بھی ہوئے۔ احمد فراز کی بہترین شاعری بھی اسی زمانے کی دین ہے

زندگی سے یہ گلہ مجھےتو بہت دیر سے ملا مجھے

کوشش کی گئی ہے آل  انڈیا ریڈیو کے اس فیچر میں احمد فراز جیسی معروف شخصیت سے متعلق اہم پہلووں کو آپ تک پہونچایا جاسکے۔

احمد فراز کی پہلی ایسی غزل جس نے انہیں  ہندوپاک میں مقبولیت کی بلندیوں تک پہونچا وہ تھا رنجش ہی صحیح   پھر اس کےبعد فراز کا ستارہ ہمیشہ عروج پر رہا۔