ریڈیو فیچر: ’’لافانی تیرے نغمے۔ لافانی تیری کہانی‘‘

anil-biswas

مشرقی  بنگال کے قصبے بریسال میں پیدا ہوئےانل بسواس نے اپنی والدہ کی سرپرستی میں بہت چُھٹپنے سے ہی موسیقی کی تربیت حاصل کرنی شروع کی۔ یہ زمانہ جدو جہد آزادی کا زمانہ تھا۔ اس طرح انل بسواس کو بھی جیل جانا پڑا۔ رہائی کے بعد انل بسواس جب کام کی تلاش میں سرگرداں تھے تب ہی ان کی ملاقات قاضی نذر الاسلام سے ہوئی جن سے انہوں نے غزل گلوکاری کا فن سیکھا۔1963 میں انل بسواس نےآل انڈیا ریڈیو جوائن کیا اور یہاں بھی انہوں نے 60 لافانی دھنیں ترتیب دیں جو آل انڈیا ریڈیو کے خزانے میں محفوظ ہیں۔

کیسا رہا انل دا کا موسیقی کا یہ سفر‘ اس کی تفصیلی معلومات فراہم کرتا ہے اردوسروس کا یہ فیچر’’لافانی تیرے نغمے۔ لافانی تیری کہانی‘‘۔