ریڈیو فیچر: ’’بزم زندگی کا شاعر۔ فراقؔ‘‘

Firaq-Gorakhpur

رگھوپتی سہائے فراق گورکھپوری

اردو اور فارسی کے عالم’ ماہر قانون اور معروف شاعر منشی گورکھ پرساد عبرت ؔکے صاحبزادے رگھوپتی سہائے فراق گورکھپورینے اپنے والدکے نقشِ قدم پر چلتے ہوئے فارسی، اردو، سنسکرت اور ہندی پر کمال کی سبقت حاصل کی لیکن انگریزی ادب سے شوق کی وجہ سے انہوں نے انگریزی میں ایم اے کیا۔ فراق صاحب پر بچپن سے ہی رامائن اور مہابھارت کے ساتھ ساتھ تلسی داس اور کبیرداس کی شاعری کا واضح اثر تھا۔

آئی سی ایس میں سلیکشن کے بعد فراق صاحب ڈپٹی کمشنر بن گئے لیکن گاندھی جی کی آواز پر لبیک کہتے ہوئے وہ جد وجہد آزادی میں کود پڑے اور نوکری سے استعفی دے دیا۔ مختصر یہ کہ جیل تک جانا پڑا۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ فراق پڑھاتے انگریزی تھے’ لکھتے اردو تھے اور پڑھتے ہر وہ کتاب تھے جو اس دور کے ہندی ساہتیہ کار لکھتے تھے۔ فراق گورکھپوری ایک زمانے میں آل انڈیا ریڈیو سے بھی وابستہ رہے اور بطور پروگرام پروڈیوسر خدمات انجام دیں۔

فراق صاحب کی ادبی’ شخصی’ علمی اور شاعری کا احاطہ کرتا ہے ہمارا فیچر “بزم زندگی کا شاعر۔ فراقؔ”۔