عالمی انصاف عدالت کا حکم پاکستان کے عدالتی نظام کے خلاف سخت تعزیری کارروائی: ارون جیٹلی

وزیرخزانہ ارون جیٹلی نے کہا ہے کہ کُلبھوشن جادو معاملے میں بین الاقوامی عدالت کا حکم پاکستان کے عدالتی نظام کے خلاف ایک سخت تعزیری کارروائی ہے۔ جناب جیٹلی نے، جو جی ایس ٹی کونسل کی دوروزہ میٹنگ میں شرکت کے لئے سری نگر میں ہیں، کہا کہ ہیگ میں آئی سی جے کے ذریعے جاری کیا گیا حکم بھارت کے موقف کی تائید کرتا ہے۔ بظاہر پاکستانی فوجی عدالت میں جادھو پر مقدمے کا حوالہ دیتے ہوئے جناب جیٹلی نے کہا کہ کسی بھی ایسی عدالتی کارروائی سے جو خفیہ طور پر اندھیرے میں رکھ کر کی گئی ہو اور جسے عوام کی نظر سے دور رکھا جائے اس میں انصاف کے بنیادی تقاضوں کی کمی ہوتی ہے۔

جناب جیٹلی نے کہا کہ بھارت میں کافی راحت محسوس کی گئی ہے اور اس بات پر خوشی بھی ہوئی ہے کہ بین الاقوامی عدالت نے بھارت کے حق میں فیصلہ سنایا۔ حالانکہ یہ حکم عبوری ہے لیکن عدالت کا حکم پاکستان کے موجودہ عدالتی نظام کے خلاف جو ایک طرح کا مذاق ہے تعزیری کارروائی کی ہے۔ وزیر موصوف نے کہا کہ بین الاقوامی قانون کے دائرے میں یہ فیصلہ قانون کی حکمرانی کی ایک بڑی جیت ہے۔

دریں اثنا وزیرخارجہ سشما سوراج نے جادھو کو بچانے کے لئے ہر ممکن اقدامات کرنے کا یقین دلایا ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی نے وزیرخارجہ سشما سوراج سے بات کی اور بین الاقوامی عدالت انصاف کے حکم پر اطمینان کا اظہار کیا۔ پی ایم او کے ذرائع نے بتایا ہے کہ جناب مودی نے عدالت کے سامنے اس معاملے کو کامیابی کے ساتھ پیش کرنے پر بھارت کے وکیل ہریش سالوے اور ٹیم کی کوششوں کو سراہا۔