ریڈیو فیچر:نورِ جہاں ۔ نور جہاں

حصّہ اوّل

 

حصّہ دوم

نور جہاں

نور جہاں کو پہلا موقع ماسٹر غلام حیدر کی فلم خزانچی میں گلوکار کے طور پر ملا مگر بطورمرکزی ہیروئن نور جہاں کی پہلی فلم خاندا ن تھی۔ اس کے موسیقار ماسٹر غلام حیدر تھے۔ جلد ہی نور جہاں کا شمار کانن دیوی اور خورشید جیسے ستاروں میں ہونے لگا پھر شوکت حسین رضوی کے ساتھ نور جہاں نے فلم زینت میں کام کیا جس میں زوہرابائی امنبالے والی کے ساتھ گائی ہوئی ان کی قوالی بہت پسند کی گئی۔ یہ کسی ہندستانی  فلم میں عورت کی گائی ہوئی پہلی قوالی تھی۔ تقسیم ہند سے عین پہلے دلیپ کمار کے ساتھ نور جہاں کی فلم جگنو ایک یادگار فلم مانی جاتی ہے ۔

نور جہاں کی آواز کی معصومیت ان کے لحن کا سوز  اور اونچے سروں میں ان کی آواز کی گونج ، نور جہاں کی وہ خصوصیات ہیں جو انہیں دوسرے سے الگ کرتی ہیں ۔ گلوکارہ اور اداکارہ دونوں حیثیتوں سے نور جہاں نے اپنی صلاحیتوں اور فن کا لوہا منوایا اور اپنی آواز کا نور ،سارےجہان میں پھیلایا۔

ان کے فن اور شخصیت پر تفصیلی روشنی ڈالتا ہے آل انڈیا ریڈیو کا یہ خصوصی فیچر نورِ جہاں۔ نور جہاں۔