ریڈیو فیچر: ’’شہر سنگ دل کا شاعر-منیرؔ نیازی‘‘

 منیرؔ نیازی

عالم تنہائی بھی کبھی کبھی شخصیت کی تعمیر میں اہم رول ادا کرتی ہے’ایسا کچھ ہوا محمد منیر خاں یعنی منیرؔ نیازی کے ساتھ۔ اردو کی قدیم داستانوں کا ہیرو اجنبی زمینوں، اجنبی منزلوں کا مسافر ہوتا تھا۔ اس کا خارجی سفر’ ہمارا داخلی سفر ہوتا تھا۔ منیر ؔنیازی کی شاعری انہیں گم گشتہ منازل کے سفر پر لے جاتی ہے جہاں ہم منیرؔ کے شعروں کی ڈور تھامے، تھوڑے سہمے، تھوڑے گھبرائے نامعلوم خواہشوں کے بے لگام گھوڑوں پر سوار ایک کُہر آلود جنگل میں پہنچ جاتے ہیں۔ اس جنگل میں لفظوں، شعروں اور نظموں کے نئے اَن دیکھے موسم ہمیں گھیر لیتے ہیں اور جہاں حسین سپنے راستہ روک کر سب کو باتوں میں  لگالیتے ہیں۔

اک ہفت رنگ ہارگرا تھا میرے قریب

اک اجنبی سے شہر میں آیا ہوا تھا میں

منیر ؔنیازی نے اردو پنجابی کے ساتھ ساتھ انگریزی میں بھی لکھا۔ ان کے اردو شاعری کے تیرہ، پنجابی کے تین اور انگریزی کے دو مجموعے کلام منظرِ عام پر آئے۔ منیرؔ نیازی کے فن اور شخصیت پر تفصیلی طور پر روشنی ڈالتا ہے آل انڈیا ریڈیو کی اردو سروس کا یہ دستاویزی فیچر۔