امرناتھ یاتریوں کی ہلاکت پر وزیر اعظم کا اظہار تعزیت

 

جموں و کشمیر میں سولہ امر ناتھ یاتری ہلاک اور انیس اس وقت زخمی ہوگئے، جب ان کی موٹر گاڑی جس میں وہ سفر کررہے تھے، رام بن ضلعے میں جموں سری نگر قومی شاہراہ پر ایک گہری کھائی میں جاگری۔ ایک سینئر پولیس ترجمان نے آل انڈیا ریڈیو کو بتایا کہ زخمیوں کو خصوصی علاج کے لئے بذریعہ ہوائی جہاز بھیجا گیا ہے۔ یاتریوں کو لے کر یہ بس سری نگر کی جانب جارہی تھی کہ شاہراہ پر ٹائر پھٹنے کے بعد حادثہ پیش آیا۔ وزیر اعظم جناب نریندر مودی نے یاتریوں کے جانی نقصان پر رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔

جموں و کشمیر کی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے بھی سولہ امر ناتھ یاتریوں کی موت پر صدمے کا اظہار کیا۔ انہوں نے ڈویژنل کمشنر جموں کو ہدایت دی ہے کہ وہ مہلوکین کے لواحقین کو فوراً نقد امداد جاری کریں اور یاتریوں کے جسد خاکی کو ان کے گھر بھیجنے کے انتظامات کریں۔ اسی دوران چوٹی کے علیحدگی پسند رہنماء سید علی گیلانی نے بھی امر ناتھ یاتریوں کی موت پر صدمے کا اظہار کیا ہے اور سوگوار کنبوں کے ساتھ یکجہتی ظاہر کی ہے۔

اسی دوران دس جولائی کو امر ناتھ یاتریوں پر ہوئے دہشت گردانہ حملے میں ایک زخمی خاتون عقیدت مند سری نگر میں زخمیوں کی تاب نہ لاکر چل بسی۔ پولیس کے ایک سینئر افسر نے آل انڈیا ریڈیو کو بتایا کہ مرنے والی خاتون یاتری کی للیتا کے طور پر شناخت ہوئی ہے، جو گجرات کے ولساڑ کی رہنے والی تھی۔ اس کی موت سے امر ناتھ حملے میں مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر آٹھ ہوئی ہے۔ اس حملے میں دس دیگر یاتری زخمی ہوئے تھے۔ ریاستی سرکار نے اس معاملے کی تحقیقات کے لئے پہلے ہی خصوصی تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی ہے۔