ریڈیو فیچر: پتّھروں کا مغّنی

 

وحید اختر

انیس سوساٹھ ءکے بعد اردو ادب میں ایک نیا رجحان سامنے آیاجسے ہم آپ جدید یت کے نام سے جانتے ہیں۔اس سے قبل اردو ادب میں ترقی پسند طرز فکر کا دور دورہ تھا ۔1960ءکے بعد ابھرنے والی فنکاروں کی نئی نسل نے اپنے ماقبل معاصرین سے جدا گانہ راہ نکالی۔وحید اختر کا شمار انہیں فنکاروں میں ہوتا ہے۔وحید اختر پہلے شخص ہیں جنہوں نے ببانگ دہل اس بات کا اعلان کیا کہ جدیدیت ترقی پسند ی کی توسیع ہے ۔یعنی ان کی نظر میں جدیدیت اور ترقی پسند ی ایک دوسرے کی ضد نہیں ہیں ۔اس طرح وحید اختر نے ایک مثبت رویے کی طرف ادبی معاشرے کی توجہ دلائی اور ایک دوسرے سے فائدہ اٹھانے کی ترغیب دی ۔آل انڈیا ریڈیو کی اردو سروس کی جانب سے آپ وحید اختر کی علمی خدمات پر ایک خوبصورت فیچر ملاحظہ فرمائیں پتّھروں کا مغّنی۔