پندرہ سے اٹھارہ سال کی نابالغ بیوی کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرنا مجرمانہ فعل: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے پندرہ سے اٹھارہ برس کی عمر کی نابالغ بیوی کے ساتھ جنسی تعلقات قائم کرنے کو جرم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ آبروریزی سے متعلق قانون میں اس کی رعایت  یکطرفہ اور آئین کے منافی ہے۔

آبروریزی کی تشریح کرنے والی تعزیرات ہند کی دفعہ 375 میں ایک مخصوص شق ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ کسی شخص کے اپنی اُس بیوی کے ساتھ جنسی تعلقات آبروریزی کے زمرے میں نہیں آتے، جس کی عمر پندرہ سے کم نہ ہو۔ تاہم رضامندی کے لیے عمر اٹھارہ برس ہونی چاہئے۔ سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ ریپ کے قانون میں رعایت  ایک بچی کے جسم کے ساتھ چھیڑ چھاڑ ہے۔ بنچ نے ملک میں بچیوں کی شادی کے چلن پر بھی تشویش ظاہر کی اور کہا کہ پارلیمنٹ میں جس جذبے کے تحت سماجی انصاف کے قوانین وضع کیے جاتے ہیں، ان پر عملدرآمد میں اس جذبے کا خیال نہیں رکھا جاتا ہے۔