ریڈیو فیچر: اردو افسانے کی خاتونِ اوّل

عصمت چغتائی

اردو فکشن کی تاریخ میں نسوانی آواز کی کمی کا ملال عام قاری کو ابتدا سے ہی رہا ہے لیکن ان تمام چیزوں کے درمیان بیسویں صدی میں دو نسوانی آوازیں یقینا ایسی بلند ہوئیں  جس کی وجہ سے ایک عہد تک نسوانی تحریک کو فروغ حاصل ہوا ۔ان میں سے ایک کو ہم قرة العین حید ر کے نام سے جانتے ہیں جبکہ دوسرا اہم نام عصمت چغتائی کاہے۔عصمت چغتائی نے اپنے قلم کو سماج کے اندر متوسط طبقہ کے مسلم گھرانوں میں عورتوں کے ساتھ ہونے والی ناانصافیوں کے خلاف بطور خاص استعمال کیا اور اس وقت کے سماج کے اندر عورتوں پر ہونے والے مظالم کو عیاں کرنے کا بڑااہم کام کیا ۔یہی وجہ ہے کہ تحریک نسواں کے بڑے علمبرداروں میں ان کو اہم مقام حاصل ہے ۔

پیش ہے عصمت چغتائی کی شخصیت اور خدمات پر آل انڈیا ریڈیو کے اردو سروس کا خصوصی فیچر اردو افسانے کی خاتونِ اوّل ۔