ریزروبینک نے مالی پالیسی میں ریپوریٹ چھ فیصد برقرار رکھی

ریزرو بینک آف انڈیا نے اپنی مالی پالیسی کے جائزے کے بعد پالیسی شرح میں کوئی تبدیلی نہیں کی ہے۔ ریزروبینک کے گورنر اَرجت پٹیل کی سربراہی میں چھ ارکان پر مشتمل مالی پالیسی کمیٹی نے ریپوریٹ چھ فیصد کی سطح پر جوں کی توں برقرار رکھی ہے۔ یہ وہ شرح ہے جس پر ریزرو بینک، دیگر بینکوں کو کم مدت کے قرضے دیتا ہے۔ ریورس ریپوریٹس کو بھی پونے چھ فیصد کی سطح پر برقرار رکھا گیا ہے۔ ریزروبینک نے کہا ہے کہ ترقی کو تقویت فراہم کرتے ہوئے صارفین کی قیمتوں کے اشاریے افراطِ زر کی شرح چار فیصد پر لانے کی خاطر درمیانہ مدت کا نشانہ حاصل کرنے کی غرض سے اس طرح کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

قیمتوں کی صورتحال میں اُچھال کی امید کرتے ہوئے ریزرو بینک نے موجودہ مالی سال کی دوسری ششماہی کیلئے افراطِ زر کی شرح چار اعشاریہ تین سےلیکر چار اعشاریہ سات فیصد تک رہنے کا اندازہ لگایا ہے جبکہ اس سے پہلے یہ شرح چار اعشاریہ دو سے لیکر چار اعشاریہ چھ فیصد رہنے کی بات کہی گئی تھی۔ ریزروبینک نے موجودہ مالی سال کیلئے شرح ترقی چھ اعشاریہ سات فیصد رہنے کی بات دہرائی ہے۔