مرکز آدھار کو منسلک کرنیکی تاریخ بڑھانے کو تیار

مرکز نے سپریم کورٹ کوبتایا ہے کہ مختلف سرکاری خدمات اوراسکیموں کا فائدہ اٹھانے کیلئے آدھار کو منسلک کرنے کی تاریخ وہ اگلے سال 31 مارچ تک بڑھانے کو تیار ہے۔ اِن اسکیموں وغیرہ سے فائدہ اٹھانے کیلئے آدھار کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔ اٹارنی جنرل کے کے وینوگوپال نے چیف جسٹس دیپک مشرا کی سربراہی والی بنچ کو یہ بھی بتایا کہ البتہ موبائل سروس کا بلا روک ٹوک فائدہ اٹھانے کے لیے آدھار کو منسلک کرنے کی آخری تاریخ بدستور چھ فروری ہی رہے گی، جس کی اجازت عدالت عالیہ نے بھی دی ہے۔ آدھار اسکیم کی مخالفت کرنے والوں کی طرف سے پیش ہونے والے وکیل نے بنچ سے کہا کہ مرکزی سرکار کو یہ یقین دہانی کرانی چاہئے کہ جو لوگ آدھار کو جوڑنے میں ناکام رہیں گے اُن کے خلاف کوئی زور زبردستی نہیں کی جائے گی۔

اِسی دوران سپریم کورٹ اگلے ہفتے ایک آئینی بنچ تشکیل دے گا ، جو سرکار کی مختلف اسکیموں اور سروسز سے آدھار کو جوڑنے کی مرکزی کارروائی پر روک لگانے کی درخواستوں کی سماعت کرے گی۔ 9ججوں پر مشتمل ایک آئینی بنچ نے اپنے فیصلے میں کہا تھا کہ آئین کے تحت رازداری کا حق ایک بنیادی حق ہے۔ کئی درخواست گزاروں نے اِسی بنیاد پر آدھار کے جواز کو چیلنج کیا ہے اور دعویٰ کیا ہے  کہ اِس سے رازداری کے حق کی خلاف ورزی ہوتی ہے۔