ریڈیو فیچر: ایک عہد ساز فن کار- اُتپل دَت

اُتپل دَت

بنگال میں ڈرامے کی روایت کی جڑیں خاصی گہری رہی ہیں ۔ ایک طرف تو یہ جڑیں بنگال کے لوک ڈراموں کی زمین میں پیوست ہیں ۔ تو دوسری طرف مغربی ڈراموں کے حیات آفریں پانی نے بھی لگا تار اس روایت کو سیراب کیا ہے۔ بنگال میں ڈرامے کی یہ روایت قدیم زمانے سے موجود رہی ہے۔ آج سے صدیوں پہلے جب دنیا کے بہت سے ممالک ڈرامے کے فن کا نام تک نہ جانتے تھے ، تب اس زمانے میں بھی بنگال کے فن کار بھاس، کالی داس، ہرش  اور بھوبھوتی جیسے ماہرین ِ فن کے شاہکار ڈرامے عوامی سطح پر پیش کیا کرتے تھے۔ ایسٹ انڈیا کمپنی کے دور سے لے کر روسی فن کار لے بے دیو کے دور تک اور بعد میں پارسی اور انگریزی ڈراموں کی مقبولیت کے دور تک ، بنگال کے فن کاروں کو ڈراموں کی مشرقی اور مغربی روایتوں سے فیض یاب ہونے کے مواقع مسلسل حاصل رہے۔ یہی وجہ ہے کہ جس قسم کی تخلیقی توانائی اور سماجی و سیاسی بصیرت ہم کو بنگال کے ڈرامے میں نظر آتی ہے ، وہ دیگر زبانوں میں مفقود ہے۔

ہمارے ملک کے نام ور ڈرامہ نگار اور اداکار اُتپل دت بنگال کی اِسی روایت کے پروردہ بھی تھے اور اس کے امین بھی۔ اپنے لڑکپن کے دنوں سے ہی اتپل دت نے بنگالی ڈراموں کے ساتھ ساتھ شیکسپئیر اور دیگر مغربی ڈرامہ نگاروں کے کام میں دلچسپی لینی شروع کر دی تھی۔ فیچر ایک عہد ساز فن کار اُتپل دَت میں کوشش کی گئ کہ ڈرامہ نگار اور اداکار اُتپل دت کے ڈراموں سے متعلق انکے کا م پر خاص توجہ دی جائے۔