ہندوستان کی فعال خارجہ پالیسی آسیان علاقے اور مغربی ایشیا میں مفادات کے تحفظ کی ضامن

روزنامہ ہندوستان ٹائمز نے وزیر اعظم نریندر مودی کے موجودہ سہ ملکی دورے پر اپنے اداریئے میں تحریر کیا ہے کہ نریندر مودی کی زیر قیادت ہندوستان کی فعال خارجہ پارلیسی  کے تحت، آسیان خطے اور مغربی ایشیا میں مفادات کے تحفظ کو فروغ حاصل ہو رہا ہے ۔ حالانکہ آسیان کے رکن ممالک نے چین کی بیلٹ روڈ پیش قدمی پر دستخط کئے ہیں مگر علاقائی تنازعات اور چین کی تجارتی سلامتی پالیسیوں کی وجہ سے ان میں سے متعدد ممالک محتاط رویہ اختیار کرنے پر مجبور ہیں۔ اخبار نے خیال ظاہر کیا ہے کہ اس صورت حال میں ہندوستان زبر دست قائدانہ کردار ادا کر کے کافی فائدہ اٹھا سکتا ہے۔ اس کے لئےضروری نہیں کہ وہ چین سے تنازعات مول لے بلکہ اس کو چاہئے کہ دوسرے ممالک کو بہترین اور پر کشش متبادل فراہم کرے۔ تجارت اور توانائی کی فراہمی کے علاوہ ہندوستان نے مغربی ایشائی ممالک کے ساتھ قریبی سلامتی تعلقات استوار کئے ہیں جو دہشت گردی کے خلاف جنگ کے لئے بے حد ضروری ہیں ۔اسرائیل اور فلسطین کے درمیان کچھ زیادہ مشترک نہیں ہے مگر ہندوستان کے دونوں ہی ملکوں سے خیر سگالی پر  مبنی تعلقات  ہیں جس سے اس کو مستقبل میں کافی فائدہ پہنچ سکتا ہے۔