15.05.2018 جہاں نما

ممبئی 26/11 حملوں سےمتعلق بیان کا شریف نے کیا دفاع

۔    چند روز قبل پاکستان کے سابق وزیر اعظم نواز شریف نے ممبئی حملوں میں پاکستان کے ملوث ہونے کے سلسلے میں جو بیان دیا اس کے دفاع میں انہوں نے کہا ہے کہ وہ سچ بولیں گے چاہے اس کا انجام کچھ بھی ہو۔ آج ملک کے تمام اخبارات نے اس خبر کو جلی سرخیوں کے ساتھ شائع کیا ہے ۔ روزنامہ ٹائمز آف انڈیا نے عالمی صفحے پر شائع اس خبر میں کہا ہے کہ نواز شریف کے اس بیان پر پاکستان میں کافی ہنگامہ ہوا ہے اور وہاں کے اعلیٰ اختیاراتی سول ۔ملٹری ادارے یعنی قومی سلامتی کمیٹی نے اس کو مسترد کر دیا ہے اور اس کو بے بنیاد اور گمراہ کن قرار دیا ہے ۔ ان کے اس بیان کا جائزہ لینے کے لئے عجلت میں بلائی میٹنگ میں جنرل باجوا ،این ایس سی کے مشیر ناصر خاں جنجوعہ،ڈی جی ایس آئی نوید مختار اورسینئر کابینی وزراء وغیرہ نے شرکت کی تھی۔ اس سے قبل پیر کے روز نواز شریف نے اس رائے کو یکسر غلط قرار دیاتھا کہ ان کا یہ بیان غلط طریقے سے ان سے منسوب کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ انٹر ویو میں انہوں  نے جو کچھ کہا وہ صحیح ہے ۔ اخبار نے نواز شریف کے حوالے سے مزید تحریر کیاہے کہ سابق صدر پرویز مشرف ،سابق وزیرداخلہ رحمان ملک اور قومی سلامتی کے سابق مشیر محمود درانی پہلے ہی اس کی تصدیق کر چکے ہیں۔ انہوں نے سوال کیا کہ کیوں پچاس ہزار جانوں کی قربانی دینے کے بعد بھی دنیا ہمارے بیان کی طرف توجہ نہیں دے رہی ہے اور جو شخص اس پر سوال کر رہا ہے اس کو غدار قرار دیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے طنزیہ انداز میں سوال کیا کہ جو لوگ ملک اور آئین کے ٹکڑے کر رہے ہیں اور جو لوگ ججوں کو ان کے دفتروں سے کھینچ رہے ہیں کیا وہ محب وطن ہیں؟ اخبار نے پاکستان میں ایک رپورٹر کے سوال اور نواز شریف کے جواب  کے حوالے سے تحریر کیا ہے کہ جب ان سے پوچھا گیا کہ بھارت پر یہ الزام لگایاجاتا ہے کہ اس معاملے میں وہ شہادتیں اور ثبوت دینے سے کترا رہا ہے تو انہوں نے کہا کہ شہادتوں اور ثبوتوں کی کوئی کمی نہیں ہے۔ اخبار نے آخر میں تحریر کیاہے کہ این ایس سی کی میٹنگ کے بعد وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے نواز شریف کے حوالے سے نامہ نگاروں کو بتایاتھا کہ میڈیا نے ان کے بیان کو توڑ مروڑ کر پیش کیا ہے جبکہ اخبار کے مطابق نواز شریف نے خاقان کے اس دعوے کو مسترد کر دیاہے۔

 

پاکستان خود فریبی کی دنیا میں زندہ،بھارت سے بہتر رشتوں کے لئے 26/11 میں ملوث ہونے کا کرنا ہوگا اعتراف:انڈین ایکسپریس کا اداریہ

۔    روزنامہ انڈین ایکسپریس نے نواز شریف کے بیان اور اس پیدا صورتحال پر اپنا داریہ تحریر کیاہے جس کا عنوان ہے خود فریبی کی دنیا میں‘۔اخبار لکھتا ہے کہ اگر پاکستان بھارت کے ساتھ اپنے تعلقات میں بہتری چاہتا ہے تو اس کو 11؍26 کے ممبئی حملوں میں اپنے ملوث ہونے کا اعتراف کر لینا چاہئے۔لیکن مشکل یہ ہے کہ نواز شریف کو تو اس کا اعتراف ہے مگر خود حکومت پاکستان اس سے احتراز کر رہی ہے۔خود نواز شریف کی اپنی پارٹی پی ایم ایل نے یہ کہتے ہوئے اس معاملے سے پلا جھاڑ لیا ہے کہ ان کا بیان پارٹی کے موقف کا عکاس نہیں ہے ۔اپنے اداریئے میں اخبار نے آگے لکھا ہے کہ شریف پہلے شخص نہیں ہیں جنہوں نے ممبئی حملوں میں پاکستان کے ملوث ہونے کا اعتراف کیا ہے ۔ حملوں کے چند ہفتے کے اندر ہی اس وقت کے قومی سلامتی کے مشیر محمود درانی نے سب سے پہلے اعتراف کیا تھا کہ قصاب پاکستانی ہے۔ اس کے بعد اس وقت کے وزیر داخلہ رحمان ملک نے بھی کہا تھا کہ ان حملوں کی سازش کا ایک حصہ پاکستان میں تیار کیا گیا تھا۔جس کے بعد ایف آئی اے نے اس کی تحقیقات شروع کی اور آٹھ افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کی تھی ۔ ان میں سے کچھ افراد لشکر طیبہ کے رکن تھے۔ اخبار نوازشریف کے حوالے سے لکھتا ہے کہ پاکستان میں ممبئی حملوں کا مقدمہ پایہ تکمیل تک کیوں نہیں پہنچا؟ جس کی وضاحت پاکستان نے یہ کہتے ہوئے کی تھی کہ یہ عدالتی عمل میں تاخیر کی وجہ سے ایساہوا ہے ۔اداریئے کے مطابق اعلیٰ اختیاراتی سطح پر اس پر سیاسی اعتراف کا فقدان ہے کہ تربیت یافتہ اور سلحہ اور لاجسٹک امداد کے ساتھ پاکستان سے 11 آدمیوں نے ان حملوں کو انجام دیاتھا ۔اسکے بجائے اب یہ امید کی جا رہی ہے کہ لوگ 11؍26کو بھول جائیں گےاور ایسا خیال کیا جا رہا ہے کہ پاکستان کی سول اور فوجی نظام کا پلڑا آخر الذکر کی طرف جھک رہا ہے۔اس بیان کے بعد نواز شریف ان معدودے چند سیاست دانوں میں شامل ہو گئے ہیں جن کے خیال میں بھارت اور پاکستان کے تعلقات با معنی انداز میں آگے بڑھنا چاہئے۔ اس لئے ضروری ہے کہ ممبئی حملوں کے سلسلے میں انصاف کیا جائے۔

 

پاکستان میں دہشت گردی کے تربیتی کیمپ سر گرم

3۔    روزنامہ ہندو نے پاکستان کے ہی حوالے سے ایک خبر شائع کی ہے جس میں مہاراشٹر اے ٹی ایس کے اے ڈی جی اتل چندر کلکرنی کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ سرحد پار دہشت گردوں کے تربیتی کیمپ سر گرم ہیں جو ملک کے لئے زبر دست خطرہ ہیں ۔ اس سے قبل مہاراشٹر اے ٹی ایس نے ممبئی کے شہری فیصل مرزا کو گرفتار کیا تھا۔ اس پر الزام ہے کہ وہ ممبئی میں حملوں کی سازش تیار کر رہا تھا۔اخبار لکھتا ہے کہ اس سے پوچھ تاچھ میں ایک بار پھر انکشاف ہوا ہے کہ بھارتی شہریوں کو دہشت گردی کی تربیت کے لئے پاکستان اسمگل کیا جا رہاہے جو مبینہ طور پر پاکستان کی آئی ایس آئی کی مدد سے یہاں سر گرمیاں انجام دیتے ہیں۔ اخبار نے ذرائع کے حوالے سے لکھا ہے کہ گزشتہ کئی برس میں اس بات کے بار بارا شارے ملے ہیں کہ فیصل مرزا کو پاکستان اسمگل کرنے کے طریقہ کار سے یہ تصدیق ہو گئی ہے کہ آئی ایس آئی کے ذریعہ بھرتی اور تربیت دی جا رہی ہے ۔ مرزا کو شارجہ اور دبئی ہو کر کراچی بھیجا گیا تھا۔ کراچی میں آئی ایس آئی کے ایجنٹوں نے اس کو مبینہ طور پر امداد پہنچائی اور اس کو تربیتی کیمپ میں لے گئے تھے۔ تربیت مکمل ہونے کے بعد اس کو اسی طرح واپس ممبئی بھیج دیا گیا تھا۔جب کہ اس سے قبل رنگروٹوں کو سیدھےپاکستان بھیج کر تربیت دی جاتی تھی۔

 

امریکی سفارت خانہ یروشلم منتقل،سرحد پر احتجاج میں 52فلسطینی ہلاک

۔    امریکہ نے پیر کے روز اپنا سفارت خانہ یرو شلم منتقل کر دیا ۔جس کے خلاف غزہ سرحد پر شدید احتجاج کیا گیا جس میں 52 فلسطینی ہلاک ہو گئے ۔ روزنامہ ہندوستان ٹائمز نے اس خبر کے حوالے سے  مطلع کیا ہے کہ احتجاجیوں نے اپنے احتجاج کے دوران ٹائر جلائے اور اسرائیلی فوجیوں پر آگ کے بم اور پتھر پھینکے۔ اخبار کے مطابق گریٹ مارچ آف ریٹرن کے تحت احتجاج شروع ہونے کے بعد ایک ہی دن میں فلسطینیوں کے احتجاج کے دوران ہلاک ہونے والوں کی یہ سب سے بڑی تعدادہے ۔ امریکی صدر ڈونل  ٹرمپ نے اپنی مہم میں سفارت خانے کو تل ابیب سے یروشلم لے جانے کا وعدہ کیا تھا جس سے فلسطینیوں میں کافی غصہ پھیل گیا تھا ۔کیوں کہ وہ یروشلم کو اپنے ملک کی مستقبل کی راجدھانی تصور کرتے ہیں۔ دوسری طرف ٹرمپ اور اسرائیل کے وزیر اعظم نیتن یاہو نے اسرائیل اور اسرائیلی عوام کے لئے اس کو ایک عظیم دن قرار دیا ہے۔

 

مودی ۔پتن کی اگلے ہفتے غیر رسمی بات چیت

۔    روزنامہ ایشین ایج نے خبر دی ہے کہ چین کے صدر شی جن پنگ کے ساتھ غیر رسمی بات چیت کے چند ہفتوں بعد روسی صدر ولادیمر پتن کے ساتھ غیر رسمی ملاقات کے لئے نریندر مودی 21 مئی کو روس جائیں گے۔ اخبار نے وزارت خارجہ کے حوالے سےلکھا ہے ہے کہ یہ ملاقات روس کے شہر سوچی میں ہوگی اور اس کے لئے کوئی ایجنڈا نہیں ہے ۔ وزارت نے اس آئندہ ملاقات کو ایک اہم موقع قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس میں طویل مدتی تناظر میں بین الاقوامی امور زیر بحث آئیں گے تاکہ باہمی ترجیحی اور خصوصی تعلقات کو مزید استحکام بخشا جا سکے۔اس کے علاوہ دونوں رہنما اپنی اپنی قومی ترجیحات اور باہمی امور پر بھی گفتگو کریں گے ۔

 

جموں و کشمیر میں بین الاقوامی سرحد پر زبر دست چوکسی

6۔    روزنامہ اسٹیٹس مین کی ایک سرخی ہے’’بین الاقوامی سرحد پر جموں و کشمیر میں زبر دست چوکسی‘‘اخبار نے ایک سینئر پولس افسر کے حوالے سے خبر دی ہے کہ ریاست میں بین الاقوامی سرحد پر مشتبہ ملٹنٹوں کی نقل وحرکت کا پتہ لگنے کے بعد سلامتی ایجنسیوں کو چوکس کر دیا گیا ہے ۔یہ اقدام اس وقت کیا گیا ہے جب 19 مئی کو وزیر اعظم نریندر مودی ریاست کا دورہ کرنے والے ہیں۔ کٹھوعہ ایس ایس پی کے مطابق بی ایس ایف نے سرحدی باڑھ کے نزدیک پاس  پانچ مشتبہ افراد کو دیکھا تھا جس کے بعد یہ اقدام کیا گیا ہے ۔ اس کے علاوہ اگلے تین چار روز تک تلاشی کی مہم بھی جاری رکھی جائے گی۔نیز فوج فضا سے نگرانی جاری رکھے ہوئے ہے۔

جرمنی بین الاقوامی نشانے بازی مقابلے:حنا کو سونے کا تمغہ

7۔    جرمنی کے ہینوورمیں بین الاقوامی نشانے بازی چمپئن شپ مقابلوں میں بھارتی نشانے باز حنا سدھو نے سونے کا تمغہ جیت لیا ہے ۔ روزنامہ ٹری بیون نے اس حوالے سے شائع اپنی خبر میں لکھا ہے کہ ان کی ہم وطن پی سری نویتا نے کانسے کا تمغہ حاصل کیا۔ 10 میٹر ایئر پسٹل مقابلے کے فائنل میں حنا نے ٹائی میں فرانس کی میتھلڈے لامولے کو 239 اعشاریہ 8پوائنٹس سے شکست دی جبکہ نویتا نے 219اعشاریہ دو پوائنٹس حاصل کئے۔