10.07.2018 جہاں نما

پاکستان آمد کے فوراً بعد شریف اور ان کی دختر کی گرفتاری یقینی

آج ایک بار پھر اخبارات میں پاکستان کے عام انتخابات کی خبریں چھائی ہوئی ہیں۔ روزنامہ اسٹیٹس مین نے لاہور میں پاکستان کے وفاقی وزیر قانون و اطلاعات کی’’میٹ دی پریس کانفرنس’’ کے حوالے سے تحریر کیا ہے کہ بے دخل وزیر اعظم نواز شریف اور ان کی دختر مریم نواز جیسے ہی پاکستان کی سر زمین پر قدم رکھیں گے ،حکومت ،احتساب عدالت کے حکم پر پوری طرح عمل در آمد کرتے ہوئے ان کو فوراً گرفتار کرلے گی،بشرطیکہ انہوں نے پاکستان آمد سے قبل پیشگی ضمانت حاصل نہ کر لی ہو۔ اخبار وزیرموصوف کے حوالے سے مزید رقمطراز ہے کہ شریف کے خلاف عدالت کے فیصلے سے 25 جولائی کو ہونے والے انتخابات متاثر نہیں ہوں گے اور ان کو مقررہ تاریخ پر آزادانہ ،منصفانہ انداز میں شفافیت کے ساتھ منعقد کرایا جائے گا۔انتخابات کے تعلق سے ہی روزنامہ ٹائمز آف انڈیا نے ایک خبر میں تحریر کیا ہے کہ پاکستان کے انتخابی کمیشن نے گوجرانوالہ سے پاکستان تحریک انصاف پارٹی کے ایک امیدوار ناصر چیما کو ا س لئے نا اہل قرار دے دیا ہےکیونکہ اس نے اپنے انتخابی اشتہارات اور پوسٹروں میں فوج کےسر براہ جنرل قمر باجوہ اور چیف جسٹس ثاقب نثار کی تصاویر کا استعمال کیا تھا۔ اخبار نے پاکستان کے اخبار ڈان کے حوالے سے آگے لکھا ہے کہ انتخابی کمیشن نے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کا حوالہ دیتے ہوئے ناصر چیما سے وضاحت طلب کی ہے ۔

اپنےاتحادی پاکستان کے لئے چین نے خلا میں چھوڑے دو سیارچے

اسی اخبار نے چین اور پاکستان کے تعلق سے اپنے عالمی صفحے پر ایک اور اہم خبر بھی شائع کی ہے جس کے مطابق چین نے اپنے سدا بہار اتحادی پاکستان کے لئے پیر کے روز دو ریموٹ سینسنگ سیارچے خلا میں کامیابی کےساتھ چھوڑے۔یہ سیارچے 50 بلین ڈالر کی لاگت سے تیار ہونے والی چین پاکستان معاشی راہداری کی تعمیر میں پیش رفت پر بھی نظر رکھیں گے ۔ اخبار مزید لکھتا ہے کہ اگست2011 میں پاک سیٹ 1 آر مواصلاتی سیارچہ چھوڑے جانے کے بعد موجودہ دونوں سیارچوں کی خلا میں لانچ سے دونوں ممالک کے درمیان خلائی تعاون میں مزید پیش رفت کا اظہار ہوتا ہے۔ اخبار نے چین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ژِن ہوا کے حوالے سے تحریر کیا ہے کہ پہلا پی آر ایس ایس ون سیارچہ چین کی خلائی ٹکنا لوجی اکادمی نے تیار کیا ہےاور یہ 17 واں سیارچہ ہے جو کسی ملک کو فروخت کیا گیا ہے۔ جبکہ دوسرا پاک ٹیسٹ 1۔اے پاکستان کے خلائی ادارے نے تیار کیا ہے ۔اخبار کے مطابق یہ دونوں سیارچے پاکستان کے معاشی فروغ میں اہم کردار ادا کریں گے ۔

برطانیہ میں بورس جونسن مستعفیٰ،تھریسا مے حکومت کو سنگین مشکلات کا سامنا

برطانیہ میں وزیر اعظم تھریسا مے کو پیر کے روز اس وقت دھماکہ خیز صورت حال سے دو چار ہونا پڑا جب وزیرخارجہ بورس جونسن نے بریگزٹ وزیر ڈیوڈ ڈیوس کی پیروی کرتے ہوئے استعفیٰ دے دیا۔ روزنامہ ایشین ایج نے اپنی خبر میں تحریر کیا کہ بریگزٹ کے باوجود یوروپی یونین کے ساتھ مستحکم معاشی تعلقات بر قرار رکھنے کے تھریسا مے کے منصوبے پر احتجاج کرتے ہوئے ڈیوڈ ڈیوس اور بورس جونسن نے استعفےٰ دیئے ہیں۔ بریگزٹ منصوبے کو جمعہ کے روز کابینہ سے منظوری حاصل ہوئی تھی اور اب تھریسا مےکو اپنے چار اعلیٰ وزراء میں سے دو سے ہاتھ دھونا پڑے ہیں جس کے نتیجے میں ان کی انتظامیہ اوراختیارات کو سنگین مشکلات کا سامنا ہے۔10ڈاؤننگ اسٹریٹ کے بیان کے مطابق ان کے استعفےٰ منظور کر لئے گئے ہیں ۔ اخبار آگے لکھتا ہے کہ نجی طور پر جونسن نے بریگزٹ کے خاکے کی مخالفت کی تھی اور اب تک عوامی سطح پر رائے زنی سے گریز کیا تھا مگر اب ان کے استعفیٰ سے یہ قیاس آرائیاں شروع ہو گئی ہیں کہ تھریسا مے کی قیادت کو خطرہ پیدا ہو گیا ہے۔

پومپیو، کا بل کے غیر اعلانیہ دورے پر

روزنامہ ایشین ایج کی ہی ایک اور خبر کی سرخی ہے ‘‘پومپیو کا غیر اعلانیہ دورۂ کابل’’۔ اخبار ایک افغان عہدیدار کے حوالے سے لکھتا ہے کہ افغان قیادت سے بات چیت کے لئے امریکہ کے وزیر خارجہ مائک پومپیو کل غیر اعلانیہ دورے پر کابل پہنچے۔ جس کے بعدجنگ سے متاثرہ اس ملک میں قیام امن کی دوبارہ امیدیں پیدا ہو گئی ہیں۔ اخبار کے مطابق اپریل میں امریکی سفارت کار کاحلف اٹھانے کے بعد پومپیو کا یہ پہلا دورہ ہے جوگزشتہ ماہ عید کے موقع پر غیر مثالی جنگ بندی کے بعد ہو رہا ہے۔ جنگ بندی کے موقع پر افغان سلامتی افواج اور طالبان ملٹنٹوں نے سڑکوں پر عید کی تقریبات منائی تھیں۔ اخبار مزید رقمطراز ہے کہ دونوں جانب کے جنگجوؤں نے اس طویل تنازعے پر زبر دست پریشانی کا اظہار کیا ہے جس کے بعد امید پیدا ہوگئی ہے کہ 17 سال قبل 2001 میں طالبان کو بے دخل کرنے کے لئے امریکہ کی زیر قیادت کارروائی  کے نتیجے میں جو جنگ شروع ہوئی اس کےخاتمے کے بعد ملک میں امن قائم ہو جائے گا۔دوسری جانب شورش پسندوں نے حکومت کے ذریعہ اعلان کردہ تین روزہ جنگ بندی کی درخواست میں توسیع سے انکارکردیا تھااور حملے شروع کر دیئے تھے جن میں درجنوں افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

مودی اور مون کے ہاتھوں نوئیڈا میں دنیا کی سب سے بڑی موبائل فون فیکٹری کا افتتاح

روزنامہ ہندو نے خبر دی ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی اور جنوبی کوریا کے صدر مون جے ان نے کل نوئیڈا میں سیمسنگ موبائل  فون پلانٹ کا افتتاح کیا جس کو دنیا کا سب سے بڑا پلانٹ قراردیا جا رہا ہے۔ اخبار کے مطابق تقریباً چار ہزار نو سو کروڑ کی سرمایہ کاری سے قائم اس پلانٹ کے ساتھ ساتھ جنوبی کوریا کا یہ بھی منصوبہ ہے کہ بھارت کو ایک بر آمداتی مرکز بنایا جائے ۔اس موقع پر تقریر کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ ان کی حکومت کی ‘‘ میک ان انڈیا’’ پیش قدمی نہ صرف معاشی فروغ کا اقدام ہے بلکہ جنوبی کوریا جیسےدوست ممالک کے ساتھ عمدہ تعلقات کے لئے اس کی عہد بستگی بھی ہے۔ اپنے خطاب میں صدر مون نے کہا کہ ان کو اس پر از حد خوشی ہے کہ جنوبی کوریا بھارت کی تیز رفتار ترقی میں شریک ہے۔

تھائی لینڈ میں راحت رسانی کاموں کے دوسرے دن غار میں پھنسے چار مزید بچوں کو نکالا گیا

تھائی لینڈ میں سیلابی پانی سے بھرے ایک غار میں پھنسے بچوں کے حوالے سے روزنامہ اسٹیٹس مین لکھتا ہے کہ اس غار سے چار مزید بچوں کو بحفاظت باہر نکال لیا گیا ہے۔ جس کے بعد نکالے گئے کل بچوں کی تعداد آٹھ ہو گئی ہے ۔ دو ہفتے قبل فٹ بال کھیلنے والے 12 بچے اور ان کا کوچ طوفانی بارش کے نتیجے میں زبر دست سیلاب میں پھنس گئے تھے ۔ بقیہ بچوں کو باہر نکالنے کے لئے راحت رسانی ٹیمیں شدید کوششوں میں مصروف ہیں۔

فیفا عالمی کپ سیمی فائنل مقابلے آج سے

فیفا عالمی کپ کے سیمی فائنل مقابلے آج سےشروع ہو رہے ہیں۔ آل انڈیا ریڈیو نے اپنی خبروں میں بتایا ہے کہ پہلا سیمی فائنل سینٹ پیٹرس برگ میں فرانس اور بیلجیم کےد رمیان ہندوستانی وقت کے مطابق آج رات ساڑھے گیارہ بجے ہوگا جبکہ دوسرے سیمی فائنل میں کل رات ساڑھے گیارہ بجے ماسکو کے لوز نیکی  اسٹیڈیم میں انگلینڈ اور کروشیا آمنے سامنے ہوں گے۔ ریڈیو کے مطابق فائنل مقابلہ ماسکو میں اتوار کے روز ہوگا۔