افغانستان میں فوجیوں کی تعداد دوگنی کرنے کا برطانیہ کا منصوبہ

برطانوی سرکار افغانستان میں اپنے فوجیوں کی تعداد تقریباً دوگنی کرنے کا منصوبہ بنارہی ہے۔ ایسا امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی اس درخواست کے بعد کیا جارہا ہے کہ وہاں سلامتی کی صورتحال سے نمٹنے میں مدد کرنے کے لےے مزید فوجی بھیجے جائیں۔ وزیر اعظم تھریسامے نے اعلان کیا ہے کہ حکومت طالبان اور داعش کے شورش پسندوں سے لڑنے والے افغان فوجیوں کی مدد کی غرض سے 440 اضافی فوجی بھیجے گی، جس کے بعد وہاں برطانیہ کے فوجیوں کی تعداد تقریباً 1100 ہوجائے گی۔ اضافی فوجی افغان فوجیوں کی تربیت اور مدد کیلئے ناٹو کی قیادت والے تربیتی مشن میں حصہ لیں گے۔ وہ کابل میں مقیم ہوں گے اور لڑائی میں حصہ نہےں لیں گے۔ برطانوی فوجیوں نے 2014 میں لڑاکا کارروائی ختم کردی تھی۔ یہ اعلان بلجیم میں ناٹو سربراہ میٹنگ سے ایک دن پہلے کیاگیا ہے۔