کیرل: موسلادھار بارش اور  تودے کھسکنےسے مرنے والوں کی تعداد22 ہوگئی

کیرل میں موسلادھار بارش اور زمینی تودے کھسکنے کے حادثات میں 22 افراد ہلاک ہوگئے۔ بڑے پیمانے پر زمینی تودے کھسکنے اور سیلاب کی وجہ سے پورے کیرالہ میں زبردست نقصانات ہوئے ہیں۔ شمالی ضلع سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں اور ان اضلاع میں ریڈالرٹ جاری کردیا گیا ہے۔

کیرالہ کے کئی باندھوں میں پانی کی سطح میں اضافہ ہونےکی وجہ سے ریاست کی تاریخ میں پہلی بار کم از کم 24 آبی ذخائر  کے نکاسی کے درکھول دیئے گئے ہیں تاکہ اضافی پانی کو نکالا جاسکے۔ ندیوں کے کنارے پر رہنے والے لوگوں کو چوکس رہنے اور محفوظ مقامات پر منتقل ہونے کیلئے کہا گیا ہے۔ کئی سڑکوں کے ڈوب جانے یا پانی میں بہہ جانے کی وجہ سے کئی ضلعوں میں سڑک ٹرانسپورٹ بھی متاثر ہوئی ہے مٹی کے تودے گرنے کی وجہ سے ایڈوکی اور ویانا میں بالائی سڑکیں ٹوٹ گئی ہیں جبکہ درختوں کے جڑ سے اکھڑ جانے سے آمدورفت بند ہوگئی ہیں۔ این ڈی آر ایف اور فوج راحت اور بچاؤ کے کاموں میں مصروف ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی نے کیرالہ کے وزیراعلیٰ پینارئی ویجایم سے بات کی اور ریاست کے مختلف حصوں میں سیلاب اور زمینی تودے کھسکنے سے پیدا ہوئی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔ جناب مودی نے متاثرہ لوگوں کی ہرممکن مدد کا یقین دلایا۔ وزیراعظم نے کہا کہ قدرتی آفات کی اس گھڑی میں وہ کیرالہ کے عوام کے ساتھ ہیں۔