مالدیپ: حکمراں پارٹی انتخابات کے نتیجوں کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا

مالدیپ میں صدر عبداللہ یامین کی سربراہی والی حکمراں پارٹی نے 23ستمبر کے انتخابات کے نتیجوں کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا ہے۔ مالدیپ  کی  پروگریسیو پارٹی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ چناؤ سے وابستہ مختلف طرح کی حقیقی تشویش سے پارٹی بہت متاثر ہوئی ہے۔ ان میں پولنگ میں ہیرا پھیری، دھوکہ دہی، بے ضابطگی اور بدعنوانی کے سنگین الزامات شامل ہیں۔ پارٹی نے کہا ہے کہ مالدیپ پولیس سروس کے جواب کے مطابق قانونی راستہ اختیار کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس سے پہلے وہاں کے انتخابی کمیشن نے پی پی ایم کے الزامات کو مسترد کردیا تھا اور اپوزیشن کے امیدوار ابراہیم محمد صالح کو 36 ہزار ووٹوں کے ریکارڈ فرق کے ساتھ کامیاب قرار دیا تھا۔