اکثریت حاصل کرنے کےباوجود بی جے پی مخلوط حکومت کے حق میں:وزیراعظم

بھارتیہ جنتا پارٹی، لوک سبھا انتخابات میں اپنے طور پر اکثریت حاصل کرنے کے بعد بھی ایک مخلوط سرکار بنائے جانے کے حق میں ہے۔ یہ بات وزیر اعظم نریندر مودی نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے تمل ناڈو کے پارٹی کارکنوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔اتحاد کے بارے میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے جناب مودی نے کہا کہ ایک مضبوط این ڈی اے ،بی جے پی پر بھروسے کی ایک علامت ہے۔ انہوں نے کہا کہ سابق وزیراعظم اٹل بہاری واجپئی نے علاقائی پارٹیوں کے ساتھ مل کر مخلوط سرکار کامیابی کے ساتھ چلا کر بھارتی سیاست میں ایک نئے کلچر کا مظاہرہ کیا اور علاقائی امنگوں کو اجاگر کیا۔ 

جناب مودی نے کہا کہ بی جے پی، آنجہانی واجپئی کے راستے پر چلے گی تاکہ مرکز اور ریاستیں پورے ملک کی ترقی کے لیے مل کر کام کر سکیں۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی اپنی پرانی اتحادی پارٹیوں کے ساتھ بھی مخلوط اتحاد بنانے کے لیے اپنے دروازے کھلے رکھے گی۔ انہوں نے البتہ اس بات کو بھی اجاگر کیا کہ سیاسی پارٹیوں کے مقابلے عوام کے ساتھ ہونے والا اتحاد ہی ہمیشہ ایک فاتح اتحاد ہوتا ہے۔ دفاع کے شعبے کے بارے میں وزیر اعظم نے کہا کہ سابقہ یو پی اےکے دورِ حکومت میں مسلح افواج کے لیے ساز و سامان کی خرید میں بچولیوں نے اہم رول ادا کیا تھا۔ انہوں نے ایک ایسے وقت بھارتی فضائی فوج کی صلاحیت میں اضافہ نہ کرنے کے لیے کانگریس کو مورد الزام قرار دیا کہ جب پڑوس کے کچھ ملک اپنے بیڑے کی قوت میں لگاتار اضافہ کر رہے تھے۔