امریکہ۔ طالبان مذاکرات

امریکہ اور طالبان کے  مذاکرات کاروں کے درمیان کل دوحہ میں 16 دن کی اپنی بات چیت ختم ہوگئی، جس میں کچھ اہم معاملات پر پیش رفت ہوئی لیکن کوئی بڑی پیش رفت نہ ہوسکی۔ افغانستان کے لئے امریکہ کے امن ایلچی زالمے خلیل زاد نے کہا   بات چیت کی وجہ سے ملک میں امن کے حالات میں بہتری آئی ہے۔ بات چیت کے بعد سلسلے وار ٹویٹ پیغامات میں خلیل زاد نے کہا کہ امن کے لئے چار معاملات پر معاہدے کی ضرورت ہے جن میں دہشت گردی سے لڑنے کی یقین دہانی اور فوجیوں کی واپسی کی یقین دہانی شامل ہے۔ افغان حکومت نے کہا ہے کہ وہ اس پیش رفت پر مطمئن ہے۔؎