ہزارا ہلاکت معاملے میں پاکستانی وزارت داخلہ سے رپورٹ طلب

پاکستانی سینیٹ کی ایک کمیٹی نے وزارتِ داخلہ سے رپورٹ طلب کی ہے کہ اُس نے ہزارا کی ہلاکت میں ملوث دہشت گردوں اور ممنوعہ تنظیموں کے خلاف کیا کارروائی کی ہے۔ یہ مطالبہ بلوچستان صوبے میں اقلیتی شیعہ فرقے کو نشانہ بناکر کئے گئے ایک خودکش بم دھماکے کے ایک دن بعد سامنے آیا ہے، جس میں اکیس افراد ہلاک ہوئے تھے۔ سینیٹ کی کمیٹی نے بلوچستان میں ماضی قریب میں ممنوعہ تنظیموں کے کارکنوں کو رہا کرنے کے بارے میں بھی رپورٹ طلب کی ہے۔ اِدھر ہزارا فرقے کے افراد کوئٹہ میں اب بھی دھرنے پر بیٹھے ہیں۔ یہ لوگ اُن کے بقول قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں کی لگاتار ناکامی کے خلاف احتجاج کررہے ہیں، جو انہیں سکیورٹی فراہم نہیں کرپائی۔