22.05.2019جہاں نما

۔ دوسروں کا احترام کرنا سیکھیں، امریکہ کو ایران کی تلقین، بات چیت کی تجویز کو کیا مسترد

۔ ایران نے کہا ہے کہ امریکہ کے ساتھ اس وقت تک بات چیت نہیں ہو سکتی جب تک وہ 2015 کے نیوکلیائی معاہدے کے تحت کئے گئے وعدوں کا احترام نہیں کرتا۔ تہران کی جانب سے یہ بیان منگل کے روز صدر ٹرمپ کی دھمکی کے جواب میں آیا ہے ۔ اس خبر کو تمام اخبارات نے جلی سرخیوں کے ساتھ شائع کیا ہے۔ اس خبر کے حوالے سے روزنامہ ایشین ایج تحریر کرتا ہے کہ ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے سی این این کے ساتھ ایک انٹر ویو میں کہا کہ امریکہ خلیج میں جنگی جہاز بھیج کر نہایت ہی خطرناک کھیل کھیل رہا ہے۔ انہوں نے امریکہ پر الزام لگایا کہ پہلے تو وہ نیوکلیائی معاہدے سے الگ ہو گیا جس کے تحت تہران کی نیوکلیائی سرگرمی محدود ہو کر رہ گئی ۔اس کے بعد اس نے پابندیاں عائد کر دیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کے ملک نے امریکہ پر بھروسہ کیا کہ نیوکلیائی سرگرمیوں کو محدود کرنے کے عوض وہ اس پر سے پابندیاں اٹھا لے گا جیسا کہ معاہدے میں وعدہ کیا گیا ہے ۔ لیکن اس نے سارے وعدے توڑ دیئے۔ اس لئے ایران ایسے لوگوں سے بالکل بات چیت نہیں کرے گا جنہوں نے اپنے وعدے پورے نہیں کئے ۔قابل ذکر ہے کہ اس معاہدے پر امریکہ ،ایران ، برطانیہ ، چین ، فرانس، جرمنی اور روس نے دستخط کئے تھے۔ اس سے قبل صدر ٹرمپ نے کہا تھا کہ تہران کو ان سے بات کرنی چاہئے۔ لیکن اتوار کے روز انہوں نے ایک ٹوئیٹ میں کہا کہ اگر ایران نے جنگ شروع کی تو اس کا خاتمہ یقینی ہے۔ انہوں نے ایران کو دوبارہ دھمکی نہ دینے کا انتباہ بھی کیا۔ جناب ظریف نے کہا کہ ایران اس طرح کی کسی بھی دھمکی کے آگے نہیں جھکے گا۔ انہوں نے کہا کہ کسی کو یہ امید نہیں کرنی چاہئے کہ وہ ایران کو دھمکا کر اس سے بات کر سکتا ہے۔ بات چیت کرنے کیلئے ایک دوسرے کا احترام ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر خلیج میں کشیدگی بڑھی تو اس کے سنگین نتائج برآمد ہو سکتے ہیں ۔ تاہم انہوں نے کہا کہ تہران کشیدگی میں اضافہ کرنے کے حق میں نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایران کے خلاف عائد تمام معاشی پابندیاں فوراً ختم ہونی چاہئے۔

۔ یمن کے حوثی باغیوں نے سعودی عرب کے ہوائی اڈے کو ڈرون سے بنایا نشانہ

۔ ایران کے حمایت یافتہ یمن کے حوثی باغیوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے منگل کے روز سعودی عرب کے ایک ہوائ اڈے پر بموں سے لدے ایک ڈرون سے حملہ کیا۔ اس خبر کو روزنامہ انڈین ایکسپریس نے جلی سرخی کے ساتھ شائع کیا ہے۔ اخبار لکھتا ہے کہ اس حملہ کی سعودی عرب نے تصدیق کر دی ہے ۔ تاہم اس میں کسی کے زخمی ہونے یا کسی نقصان کی کوئی خبر نہیں ملی ہے۔ یہ حملہ سعودی عرب کے شہر نجران پر ایران کے اس اعلان کے بعد کیا گیا کہ وہ پورینیم کی افزودگی میں چار گنا اضافہ کر رہا ہے۔ تہران نے یوروپ کیلئے نیوکلیائی معاہدے کی نئی شرائط طے کرنے کیلئے 7 جولائی کی ڈیڈلائن طے کی ہے۔ اگر 7 جولائی تک نئی شرائط طے نہیں کی گئیں تو وہ یورینیم کی افزودگی میں اس سطح تک اضافہ کردےگا جس سے نیوکلیائی اسلحے تیار ہو سکیں۔ ڈرون حملے کے بارے میں حوثیوں کے المسیرہ سٹیلائٹ نیوز چینل نے کہا کہ نجران ہوائی اڈے کوایک قصف-ٹو کے ڈرون سے نشانہ بنایا گیا۔نجران سعودی-یمن سرحد پر واقع ہے جو ریاض سے تقریباً 640 کلو میٹر کی دور ی پر ہے۔ اور اس شہر کو حوثیوں نے بار بار اپنا نشانہ بنایا ہے۔ اس سے پہلے سرکاری سعودی پریس ایجنسی نے مخلوط فوجوں کے ترجمان کرنل ترکی المالکی کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ حوثیوں نےنجران میں ایک شہری علاقہ کو نشانہ بنانے کی کوشش کی۔ تاہم اس کی تفصیلات نہیں بتائی گئیں۔ نیویارک ٹائمز نے پچھلے سال خبر دی تھی کہ امریکی خفیہ تجزیہ کار نجران میں موجود ہیں جہاں وہ سرحد پر سعودی اور امریکی فوجوں کی تعیناتی میں مدد کر رہے ہیں ۔ قابل ذکر ہے کہ پچھلے ہفتہ حوثیوں نے سعودی عرب کی تیل کی پائپ لائنوں پر بھی متعدد حملے کئے تھے۔

۔ مسعود اظہر کو عالمی دہشت گرد قرار دینے کا سلامتی کونسل کے ارکان نے کیا خیر مقدم

۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے رکن ممالک نے دہشت گرد تنظیم جیش محمد کے سرغنہ مسعود اظہر کو عالمی دہشت گرد قرار دیئے جانے کا خیر مقدم کیا ہے۔ اس خبر کو روزنامہ دی اسٹیٹسمین نے اپنے کالموں میں خاص جگہ دی ہے۔ اخبار تحریر کرتا ہے کہ سلامتی کونسل نے چین کی جانب سے تکنیکی روک ہٹانے کے بعد اظہر کو یکم مئی کو عالمی دہشت گرد قرار دیا تھا۔ اسے دہشت گرد قرار دینے کی تجویز امریکہ ، برطانیہ اور فرانس نے پیش کی تھی۔سلامتی کونسل کا یہ اقدام بھارت کیلئے ایک زبردست جیت تھی، کیونکہ نئی دہلی اس کے لئے برسوں سے کوششیں کر رہا تھا۔ مسعود اظہر پلوامہ حملے سمیت بھارت کے خلاف متعدد دہشت گردانہ حملوں کا ماسٹر مائنڈ ہے۔ اقوام متحدہ میں امریکہ کے کارگذار مستقل نمائندے جوناتھن کوہین نے سلامتی کونسل کی ششماہی میٹنگ میں کہا کہ ہمیں خوشی ہے کہ اقوام متحدہ نے اس ماہ جیش محمد کے سرغنہ مسعود اظہر اور پاکستان اور افغانستان میں سرگرم داعش سے تعلق رکھنے والے گروپ آئی ایس آئی ایس –خراسان پر پابندی عائد کردی۔ انہوں نے کہا کہ اظہر کو عالمی دہشت گرد قرار دیئے جانے سے ظاہر ہوتا ہے کہ بین الاقوامی برادری دہشت گردوں کو ان کی حرکتوں کیلئے جوابدہ ٹھہرا سکتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آئی ایس آئی ایس-خراسان کو بھی دہشت گرد قرار دینا یہ ظاہر کرتا ہے کہ سلامتی کونسل داعش کو پنپنے نہیں دے گی۔ جناب کوہین نے کہا کہ وہ ان اہم فیصلوں کیلئے سلامتی کونسل کے اپنے ساتھیوں کو مبارکباد پیش کرتے ہیں۔ جرمنی اور پولینڈ نے بھی جنہوں نے مسعود اظہر کر عالمی دہشت گرد قرار دینے کی تجویز پیش کی تھی، ان فیصلوں کو ایک اہم حصولیابی قرار دیا۔

۔ بنگلہ دیش نے پاکستانی شہریوں کو ویزا دیناکیا بند

۔ بنگلہ دیش نے کہا ہے کہ اس نے پاکستانی شہریوں کو ویزا دینا بند کر دیا ہے۔ ڈھاکہ کے اس فیصلے سے دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات متاثر ہوئے ہیں۔اس خبر کو روزنامہ ہندوستان ٹائمز نے جلی سرخی کے ساتھ شائع کیا ہے۔ اخبار تحریر کرتا ہے کہ اسلام آباد میں  بنگلہ دیش ہائی کمیشن میں پریس کونسلر اقبال حسین نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ چونکہ پیر کے روز سے بنگلہ دیش ہائی کمیشن کا ویزا کاؤنٹر بند کر دیا گیا ہے اس لئے پاکستانی شہریوں کو ویزا جاری نہیں کیا جا رہا ہے۔ بنگلہ دیش کا کہنا ہے کہ اس نے پاکستان کے نئے ہائی کمشنر کی نامزدگی کو ماننے سے انکار کر دیا تھا جسکے بعد اسلام آباد نے اس کے سفارتکار کے ویزے کی تجدید کرنے میں کافی تاخیر کی۔ اسلام آباد کے اس اقدام کے سبب بنگلہ دیش نے پیر کے روز سے اپنا ویزا کاؤنٹر بند کر دیا۔ قابل ذکر ہے کہ پاکستان کی وزارت خارجہ نے گذشتہ برس مارچ میں تقلین سیدہ کا نام بنگلہ دیش بھیجا تھا لیکن ڈھاکہ نے ان کی تقرری کی تجویز کا کوئی جواب نہیں دیا۔ تاہم بنگلہ دیش نے زبانی طور پر پاکستانی حکومت کو بتا دیا تھا کہ وہ سیدہ کی نامزدگی کو تسلیم نہیں کرےگا۔ اس نے اسلام آباد سے کہا کہ وہ ان کی جگہ کوئی متبادل امیدوار کا نام بھیجے ۔ لیکن پاکستان کسی متبادل امیدوار کا نام بھیجنے سے قاصر رہا اور اس ہفتے سیدہ کو کینیا میں پاکستان کا ہائی کمشنر مقرر کر دیا گیا۔ لیکن بعد میں منگل کے روز بنگلہ دیش کے وزیر خارجہ اے کے عبدالمومن نے کہا کہ ان کے ملک نے پاکستانی شہریوں کو ویزا دینا بند نہیں کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہو سکتا ہے کہ کچھ معاملات میں تاخیر ہوئی ہو جیسا کہ عام طور پر تمام دنیا میں ہوتا ہے انہوں نے کہا کہ ہو سکتا ہے اسٹاف کی کمی کی وجہ سے بھی ویزا جاری کرنے میں دشواری پیش آ رہی ہو۔

۔ معین الحق بھارت میں پاکستان کے نئے ہائی کمشنر

۔ کیریئر سفارتکار معین الحق کو ہندوستان میں پاکستان کا نیا ہائی کمشنر مقرر کیا گیا ہے۔ اس خبر کو روزنامہ ٹریبیون نے جلی سرخی کے ساتھ شائع کیا ہے۔ اخبار تحریر کرتا ہے کہ ہندوستان کے ساتھ تازہ بات چیت شروع کرنے کیلئے جہاں جلد ہی ایک نئی حکومت تشکیل ہونے والی ہے، پاکستان نے معین الحق کو اپنا نیا ہائی کمشنر مقرر کیا ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے مختلف ملکوں کیلئے دو درجن سے زیادہ سفیروں کے تقرر کو منظوری دی ہے۔ ان ملکوں میں بھارت، چین اور جاپان شامل ہیں۔ جناب حق اس وقت فرانس میں ایک سفیر کی حیثیت سے کام کر رہے ہیں ۔ اس سے پہلے انہوں نے دفتر خارجہ میں چیف آف پروٹوکول کی حیثیت سے کام کیا تھا۔ وہ 1987میں پاکستان کی فارن سروس میں شامل ہوئے اور ترکی ،کناڈا اور سری لنکا جیسے ملکوں میں تعینات رہے۔  اپریل میں سہیل محمود کی خارجہ سکریٹری کے طور پر تقرری کے بعد بھارت میں پاکستانی ہائی کمشنر کا عہد ہ خالی پڑا تھا۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ نئی دہلی کافی اہمیت کی حامل ہے اس لئے کافی صلاح و مشورہ کے بعد معین الحق کو وہاں ہائی کمشنر کی حیثیت سے بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

۔ اور جوکو ودودو  دوبارہ انڈونیشیا کے صدر منتخب

۔ انڈونیشیا کے صدر جوکو ودودو کو گذشتہ ماہ ہونے والے صدارتی انتخابات میں کامیاب قرار دے دیا گیاہے۔ اس خبر کو تمام اخبارات نے جلی سرخیوں کے ساتھ شائع کیا ہے ۔ اس خبر کے حوالے سے روزنامہ دی اسٹیٹس مین تحریر کرتا ہے کہ انتخابی کمیشن آج نتائج کے اعلان کرنے والا تھا لیکن اس نے کل ہی بغیر کوئی نوٹس دیئے انکا اعلان کر دیا۔ ان کے حریف پرابووو سوبیانتوں نے الزام لگایا ہے کہ انتخابات میں زبردست دھاندلی کی گئی ہے۔ انہوں نے متنبہ کیا کہ اس دھاندلی کے باعث لوگ سڑکوں پر اتر آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ وہ نتائج کو عدالت میں چیلنج کریں گے۔