23.05.2019 جہاں نما

۔ پارلیمانی انتخابات کے ووٹوں کی گنتی جاری، این ڈی اے 338 سیٹوں پر جبکہ یو پی اے 91 پر آگے

۔سترہ ویں لوک سبھا اور چار ریاستی اسمبلیوں آندھرا پردیش، اڈیشہ، سکم اور اروناچل پردیش کے ووٹوں کی گنتی سخت حفاظتی انتظامات کے تحت جاری ہے۔ آل انڈیا ریڈیو کے مطابق لوک سبھا کے تقریباً سبھی حلقوں کے رجحانات موصول ہوگئے ہین۔ جن کے مطابق این ڈی اے 338، یو پی اے 91 اور دیگر 113 حلقوں میں آگے چل رہے ہیں۔ بی جے پی خود اکیلے 296 سیٹوں پر جبکہ کانگریس 51 پر آگے ہے۔ ڈی ایم کے 23، جے ڈی یو 16، شیو سینا 19، وائی ایس آر کانگریس 23، ٹی آر ایس 9، بی ایس پی 11، ایس پی 7، ترنمول کانگریس 22، بیجو جنتادل 16 اور دیگر پانچ حلقوں میں آگے ہیں۔ جن سرکردہ امیدواروں کو سبقت حاصل ہے ان میں بی جے پی کے اعلی رہنما اور وزیراعظم نریندر مودی، پارٹی سربراہ امت شاہ، مرکزی وزرا اسمرتی ایرانی اور راجناتھ، نتن گڑکری، ہنس راج اہیر، پونم مہاجن اور یو پی اے کی سربراہ سونیا گاندھی شامل ہیں۔ کانگریس صدر راہل گاندھی کو کیرالا میں وائناڈ میں برتری حاصل ہے۔ اسی طرح ششی تھرور تھرواننت پورم میں آگے چل رہے ہیں۔ مہاراشٹر کے سابق وزیراعلی اور کانگریس کے امیدوار اشوک چوہان پیچھے چل رہے ہیں۔ چنڈی گڑھ میں بی جے پی کی کرن کھیر کو کانگریس کے پون کمار بنسل پر برتری حاصل ہے۔ پنجاب میں بی جے پی کے سنی دیول گرداس پور میں، شرومنی اکالی دل کے سکھ بیر سنگھ بادل فیروز پور میں اور سنگ رور میں عام آدمی پارٹی کے موجودہ ممبر پارلیمنٹ بھگونت مان کو برتری حاصل ہے۔

اترپردیش میں مرکزی وزرا سنجیو کمار بَلیان، وی کے سنگھ، مہیش شرما، شنتوش کمار گنگوار، منوج سنہا، انوپریا پاٹل، نرنجن جیوتی، مینکا گاندھی اور فیروز ورون گاندھی آگےچل رہے ہیں۔ ریاستی کانگریس کے سربراہ راج ببر بھی آگے چل رہے ہیں۔ سماجوادی پارٹی کے ملائم  سنگھ یادو اور پارٹی سربراہ اکھلیش یادو اور ڈمپل یادو بھی سبقت لئے ہوئےہیں۔ پارٹی کی امیدوار پونم سنہا لکھنٔو میں پیچھے چل رہی ہیں۔ اتراکھنڈ میں بی جے پی سبھی پانچوں سیٹوں پر سبقت لئے ہوئے ہے۔

۔ لنکا اور پلوامہ حملوں کے بعد دہشت گردی سے لڑائی اور مضبوط : سشما سوراج کا بیان

۔ وزیر خارجہ سشما سوراج نے کہا ہے کہ سری لنکا اور پلوامہ میں ہوئے دہشت گردانہ حملوں کے بعد بھارت کا دہشت گردی کے خلاف لڑنے کا عہد اور مضبوط ہوا ہے۔ وہ کل کرغیزستان کی راجدھانی بشکیک میں شنگھائی تعاون تنظیم کی میٹنگ سے خطاب کررہی تھیں۔ اس خبر کو تمام اخبارات نے اپنے کالموں میں خاص جگہ دی ہے۔ اس خبر کے حوالے سے روزنامہ دی انڈین ایکسپریس تحریر کرتا ہے کہ محترمہ سوراج نے کہا کہ بھارت دیرپا اور جامع سلامتی کے لئے ایس سی او فریم ورک کے اندر تعاون کو فروغ دیتا رہے گا۔ سری لنکا میں ہوئے دہشت گردانہ حملوں کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم سری لنکا کے عوام کے ساتھ ہیں جنہوں نے حال ہی میں دہشت گردانہ حملوں کا تلخ تجربہ کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ پلوامہ میں ہوئے دہشت گردانہ حملوں سے ملے زخم ابھی بھرے نہیں تھے کہ ہمارے پڑوسی ملک سری لنکا سے ایسے حملوں کی خبر آئی۔ ان حملوں نے دہشت گردی کی لعنت سے لڑنے کے ہمارے عزم کو اور مضبوط بنادیا ہے۔اس میٹنگ میں پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی بھی موجود تھے۔ محترمہ سو راج نے کہا کہ بھارت تنظیم کے ارکان کی معاشی سرگرمیوں کے لئے موافق ماحول تیار کرنے کے لئے کام کرتا رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ بھارت علاقائی کنکٹی ویٹی  کے لئے پابند عہد ہے جس کی مثالیں بین الاقوامی شمال۔ جنوبی ٹرانسپورٹ کوریڈور، چابہار بندرگاہ، اشک آباد معاہدہ اور بھارت۔ میانما۔ تھائی لینڈ سہ فریقی شاہ راہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت اس کسی بھی عمل کی حمایت کرے گا جس سے افغانستان کی تعمیر نو ہوسکے اور وہاں امن و استحکام قائم ہوسکے۔

۔ انڈونیشیا میں انتخابی نتائج کے خلاف پرتشدد احتجاج، 6 افراد ہلاک

۔ انڈونیشیا میں انتخابی نتائج کے خلاف پرتشدد احتجاج کے دوران کم از کم 6 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ اس خبر کو تمام اخبارات نے جلی سرخیوں کے ساتھ شائع کیا ہے۔ اس خبر کے حوالے سے روزنامہ دی ہندو تحریر کرتا ہے کہ صدر جوکو ویدودو کے دوبارہ صدر منتخب ہونے کے بعد راجدھانی جکارتہ میں تشدد پھوٹ پڑا۔ نتائج کے خلاف لوگ سڑکیوں پر اتر آئے جس کے بعد مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپیں شروع ہوگئیں۔ ان جھڑپوں میں کم از کم 6 افراد ہلاک اور 200 سے زیادہ زخمی ہوئے۔ مظاہرین نے سڑکوں پر کھڑی کاروں کو بھی نذر آتش کردیا۔ فسادات کے نتیجہ میں درجنوں افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ انتخابات کے بعد پیدا ہونے والی کشیدہ صورتحال کی وجہ سے امریکی اور آسٹریلیائی سفارتخانوں نے سکیورٹی ایڈوائزری جاری کردی ہے۔ افواہوں اور جعلی خبروں کو روکنے کے لئے حکام نے سوشل میڈیا تک رسائی پر پابندی عاید کردی ہے۔ قومی پولیس چیف ٹیٹو کارناوین  نے بتایا کہ تشدد میں 6 افراد ہلاک ہوئے لیکن انہوں نے حکام کی جانب سے مجمع پر براہ راست فائرنگ کرنے کے بیان کو مسترد کردیا۔ انہوں نے کہا کہ کچھ لوگوں کو گولیوں سے زخم ضرور آئے ہیں۔ گزشتہ روز انڈونیشیا میں فسادات کا آغاز اس وقت ہوا جب انتخابی کمیشن نے جوکو ویدودو کی جیت کی تصدیق کی۔ ان کے حریف سابق فوجی جنرل پرابوو سوبیانتو نے کہا تھا کہ وہ نتائج کو عدالت میں چیلنج کریں گے لیکن ساتھ ہی خبردار کیا تھا کہ نتائج میں دھاندلی کی وجہ سے سڑکوں پر مظاہرے بھی کئے جاسکتے ہیں۔ مظاہروں کی وجہ سے شہر کے مختلف علاقوں تک جانے والے راستے، شاپنگ مالز، کاروباری ادارے اور اسکول و کالج بند کردیئے گئے ہیں۔

۔ خلیج میں ایران کے خلاف فوجی تیاری جنگ کے لئے نہیں بلکہ ایران کو جنگ سے روکنے کےلئے، امریکہ کا بیان

۔ امریکہ کے اعلی حکام نے کہا ہے کہ خلیج میں ایران کے خلاف فوجی تیاری جنگ کرنے کے لئے  نہیں بلکہ تہران کو یہ باور کرانے کےلئے ہے کہ اگر اس نے کوئی غلطی کی تو اسے اس کے سخت نتائج بھگتنے پڑیں۔ اس خبر کو روزنامہ ہندوستان ٹائمز نے جلی سرخی کے ساتھ شائع کیا ہے ۔ اخبار لکھتا ہے کہ منگل کے روز وزیر خارجہ مائک پومپیو اور وزیر دفاع پیٹ شناہن نے امریکہ سینیٹ اور ایوان نمائندگان کو ان حالات کے بارے میں بتایا جن کی وجہ سے خلیج میں امریکی جنگی جہاز تعینات کئے گئے۔ کانگریس کی بریفنگ کے بعد وزیر دفاع شناہن نے کہا کہ ہم نے اپنی فوجیں اور جنگی جہاز تعینات کرکے کسی بھی ممکنہ ایرانی حملے کو روک دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ صورتحال کو بگڑنے نہیں دینا چاہتا۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ تمام فوجی تیاریاں ایران کو بعض رکھنے کےلئے ہیں نہ کہ جنگ کرنے کے لئے۔ انہوں نے کہا کہ ہم مغربی ایشیا میں اپنے مفادات کا دفاع کررہے ہیں۔ خلیج میں امریکی جنگی جہازوں کی تعیناتی سے قبل امریکہ کو خبر ملی تھی کہ خلیج فارس میں میزائلوں سے لیس ایرانی کشتیاں نظر آرہی ہیں۔ جس کے بعد امریکہ نے جنگی جہاز بھیجنے کا فیصلہ کیا تھا۔ حالانکہ ایرانی کشتیاں اب وہاں سے واپس ہوچکی ہیں۔

۔ کیمیائی ہتھیاروں کے مبینہ استعمال پر ملک شام کو امریکہ کا انتباہ

۔ امریکہ نے کہا ہے کہ اسے ایسے اشارے مل رہے ہیں کہ شام میں صدر بشار الاسد کی حکومت نے حالیہ دنوں میں کیمیائی ہتھیار استعمال کئے ہیں۔ امریکی محکمہ خارجہ نے خبر دار کیا کہ اگر یہ اطلاعات درست ثابت ہوتیں تو امریکہ اور اس کے اتحادی شامی حکومت کے خلاف فوری اور موثر کارروائی کریں گے۔ اس خبر کو روزنامہ اسٹیٹس مین نے جلی سرخی کے ساتھ شائع کیا ہے۔ اس خبر کے حوالے سے اخبار تحریر کرتا ہے کہ شامی فوجوں کی جانب سے کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کی خبروں کے بعد امریکہ نے 2017 اور 2018 میں شام پر جوابی حملے کئے تھے۔ اس سے پہلے منگل کے روز روس کی وزارت دفاع نے ادلیب میں باغیوں پر کیمیائی ہتھیاروں کے حملوں کی جھوٹی خبریں پھیلانے کا الزام عائد کیا تھا۔ روس کے الزام کا جواب دیتے ہوئے امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان مورگن اورٹاگس  نے کہا کہ یہ افواہیں پھیلانے کی ایک کوشش ہے تاکہ شامی حکومت کو کوئی مورد الزام نہ ٹھہراسکے۔

جناب مورگن نےکہا کہ اسد حکومت نے دوبارہ کیمیائی ہتھیار کا استعمال شروع کردیا ہے اور 19 مئی کو شمال مغربی شام میں مبینہ کلورین حملے کی اطلاعات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مبینہ حملے کی تفصیلات اکٹھا کی جارہی ہیں اور اگر یہثابت ہوگیا کہ شامی حکومت نے واقعی کیمیائی ہتھیار استعمال کئے ہیں تو اسے امریکہ اور اس کے اتحادیوں کی تادیبی کارروائی کا سامنا کرنا ہوگا۔ واضح رہے کہ ادلب باغیوں کا آخری مضبوط گڑھ ہے اور شامی حکومت اس علاقے پر بھی اپنی عمل داری بحال کرنے کی شدت سے کوشش کررہا ہے۔

۔ چین نے پاکستان کو سونپا جے ایف۔ 17 لڑاکو طیارہ

۔ چین نے ضروری مرمت اور اسے بہتر بنانے کے بعد پہلا جے ایف۔ 17 لڑاکو طیارہ پاکستان کو سونپ دیا ہے۔ اس خبرکو تمام اخبارات نے جلی سرخی کے ساتھ شائع کیا ہے۔ اس خبر کے حوالے سے روزنامہ ٹریبیون تحریر کرتا ہے کہ اس طیارے کے حصول کے بعد پاکستانی فضائیہ کی طاقت میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ دونوں ملکوں نے کثیر مقصدی لڑاکو طیارے کی پیدوار کےلئے ایک دہائی پہلے سمجھوتہ کیا تھا۔ اسی سمجھوتے کے تحت پاکستان کے جے ایف 17 طیارے کو بہتر بنایا گیا ہے۔ چین کے سرکاری اخبار گلوبل ٹائمز میں شائع ایک خبر کے مطابق چین نے ایک سیٹ والے ہلکے جے ایف۔ 17 طیاروں کی پہلی کھیپ 2007 میں پاکستان کو سونپی تھی۔ ایک دہائی تک استعمال کے بعد ان طیاروں کو پہلی بار بہتر بنایا جارہا ہے۔

۔ عمان کی ادیبہ جوفہ الحارثی کےنام رواں برس کا مین بکر پرائز

۔ عمان کی ادیبہ جوفہ الحارثی کو 2019 کے مین بوکرز انعام کا حقدار قرار دیا گیا ہے۔ یہ عربی کی پہلی مصنفہ ہیں جنہیں یہ انعام دیا جائے گا۔ اس انعام کا اعلان لندن میں منعقدہ ایک تقریب میں کیا گیا۔ یہ انعام انہیں عربی زبان میں لکھے گئے ناول پر دیا گیا ہے جس کا نام سیدۃ القمر ہے اور انگریزی میں ان کا نام سلیسیٹل بایزرکھا گیا ہے۔ 40 سالہ حارثی سلطان قابوس یونیورسٹی کے شعبہ عربی میں ایسوسی ایٹ پروفیسر ہیں۔ اس انعام کا فیصلہ کرنے والی جیوری کے مطابق الحارثی کے اس ناول میں نو آبادیاتی دور کے بعد کے عمان میں تین بہنوں کی یاد داشتوں کو موضوع بنایا گیا ہے۔ یہ ناول کسی عمانی ادیبہ کا وہ پہلا ناول ہے جس کا انگریزی زبان میں ترجمہ کیا گیا ہے۔