11.06.2019 جہاں نما

شنگھائی تعاون تنظیم کےسربراہ اجلاس کےموقع پرمودی کی شی اور پوتن سے ہوگی بات چیت،عمران خان سے کوئی بات چیت نہیں

آج اخبارات نے جن اہم خبروں کی طرف توجہ مرکوز کرائی ہے ان میں شنگھائی تعاون تنظیم کے سر براہ اجلاس میں وزیر اعظم نریندر مودی کی شرکت اور اس موقع پر چین کے صدر شی جن پنگ اور روس کے صدر ولادیمیر پوتن سے ملاقات کی اہم خبر بھی شامل ہے۔اس حوالے سے روزنامہ ایشین ایج لکھتا ہے کہ یہ سر براہ اجلاس کرغزستان کے دارالحکومت بشکیک میں 13 اور 14 جون کو ہوگا۔ توقع ہے کہ 14 جون کو اجلاس سے اپنے خطاب  میں وزیر اعظم مودی دہشت گردی کا مسئلہ اٹھائیں گے حالانکہ اس موقع پر نریندر مودی اور پاکستان کے وزیر اعظم عمران خاں کے درمیان ملاقات طے نہیں ہے مگر دیکھنا یہ ہے کہ آیا دونوں رہنماؤں کے درمیان کوئی غیر رسمی ملاقات ہوگی؟ واضح ہو کہ اس طرح کی ملاقات کے لئے وزیر اعظم پاکستان اور اس کے وزیر خارجہ نے مبینہ طور پر درخواست کی ہے۔اخبار کے مطابق دلچسپ بات یہ ہے کہ اس سال کے اواخر میں ہونے والے تنظیم کے کثیر جہتی دفاعی تبادلوں میں ہندوستان اور پاکستان کی افواج کی شمولیت ہو سکتی ہے۔ اس صورت میں فروری میں دونوں ممالک کی افواج کے درمیان کشیدگی کے بعد پہلی بار یہ فوجیں فوجی مشق کا حصہ ہوں گی۔ اخبار آگے رقمطراز ہے کہ ایسے وقت میں جب سرکاری اعانت یافتہ دہشت گردی کے سلسلے میں پاکستان عالمی ایجنسی کے زیر نگرانی ہے،ہندوستانی وزارت خارجہ کے عہدیداروں نے اشارہ دیا ہے کہ ہندوستان تمام ممالک کو درپیش دہشت گردی کے خطرے کے مسئلے کو اس کانفرنس میں اٹھائے گا۔ لیکن اس کے ساتھ ہی یہ اندازے بھی لگائے جا رہے ہیں کہ شنگھائی تعاون تنظیم کی کثیر رخی حیثیت کی وجہ سے ہندوستان،پاکستانی سر زمین یا اس کے خطے سے جاری دہشت گردی کے مسئلے کو براہ راست نہیں اٹھائے گا۔اخبار بیجنگ میں وزارت خارجہ کے حوالے سے آگے رقمطراز ہے کہ اس ہفتے ایس سی او اجلاس کے موقع پر صدر شی اور وزیر اعظم مودی امریکہ کے ساتھ اپنے متعلقہ تجارتی ٹکراؤ کے معاملات پر تبادلہ خیال کر سکتے ہیں۔ اس ملاقات کو چینی ذرائع اہم قرار دے رہے ہیں۔

معروف صحافی،مصنف،اداکار و ہدایت کارگریش کرناڈ کا انتقال

اخبارات کی دیگر اہم خبروں میں معروف مصنف،پلے رائٹر،اداکار اور عوامی دانشور گریش کرناڈ کے انتقال کی خبر بھی شامل ہے ۔ روزنامہ ہندو لکھتا ہے کہ گیان پیٹھ اور پدم بھوشن اعزاز یافتہ گریش کرناڈ کا پیر کی صبح81 سال کی عمر میں ان کی رہائش گاہ  پر انتقال ہوا،وہ طویل عرصے سے سانس کی بیماریوں میں مبتلا تھے۔ صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند ،وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر اطلاعات و نشریات پرکاش جاوڈیکر نے تھیٹر اور سنیما کی اس معروف ہستی کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔ کرناٹک حکومت نے ان کے انتقال پر پیر کو عام تعطیل اور تین روزہ سرکاری سوگ کا اعلان کیا ہے۔اخبار ان کی گرانقدر خدمات اور شخصیت پر روشنی ڈالتے ہوئے آگے رقمطراز ہے کہ انہوں نے کئی فلموں میں اپنی ادا کاری کے جوہر دکھائے جن میں نشانت،منتھن،سوامی،پکار،اقبال،ڈور،ایک تھا ٹائیگراور ٹائیگر زندہ ہے وغیرہ کافی مشہور ہیں۔ وہ مشہور ٹی وی پروگرام مالگڈی ڈیز میں سوامی کے باپ کے کردار میں بھی نظر آئے۔ کنڑ زبان میں ان کی آخری فلم اپنا دیش تھی اور ان کی مشہور کنڑ فلموں میں تبالیو مگانے،اوندا نووندو کلا دالی چیلووی ،کادو اور کنڑ ہیگا دیتی شامل ہیں۔ان کے ڈراموں میں ییاتی،تغلق ،ہودن،انجو ملیگے،اگنی متومالے وغیرہ کافی معروف ہیں۔ اس کے علاوہ انہوں نے اتسو،ٹیبیلیو نینا ڈے میگانے اور کاڈو جیسی فلموں کی ہدایت کاری بھی کی ۔اخبار کے مطابق گریش کرناڈ کا شمار مشہور و معروف تخلیق کاروں اور ادا کاروں میں کیا جاتا ہے۔اپنی زندگی میں انہوں نے ڈرامہ نگار،ادا کار،فلم ہدایت کار،مصنف،صحافی وغیرہ کرداروں کو بخوبی نباہا ہے۔ بیش بہا خدمات کے لئے ان کو 1974 میں پدم شری اور 1992 میں پدم بھوشن اعزاز سے سر فراز کیا گیا۔ کنڑ ادب کی تخلیقی تحریر کے لئے 1998 میں ان کو ہندوستان کے باوقارترین اعزاز گیان پیٹھ ایوارڈ سے بھی نوازا گیا۔ اس کے علاوہ1998 میں ہی انہیں کالی داس سمان بھی پیش کیا گیا۔ گریش کرناڈ سنگیت ناٹک اکادمی ،فلم و ٹیلی ویژن انسٹی ٹیوٹ پونے اور نہرو سینٹر لندن کے سربراہوں کے عہدے پر بھی فائز رہے۔

کٹھوعہ عصمت دری وقتل مقدمہ:3؍ مجرموں کو تاعمرسزائے قید،تین دیگر کو پانچ پانچ سال کی قید

روزنامہ اسٹیٹس مین نے خبر دی ہے کہ پنجاب کے ضلع پٹھان کوٹ میں عدالت نے جنوری 2018 کے کٹھوعہ آبروریزی اور قتل کے مقدمے میں آٹھ میں سے 6 ملزموں کو مجرم قرار دیتے ہوئے 3 کو تا عمر قید اور دیگر 3 کو پانچ پانچ سال قید کی سزا سنائی ہے۔ اول الذر پر فی کس ایک لاکھ روپے اور آخر الذکر پر فی کس 50ہزار روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا۔ عدالت نے ساتویں ملزم وشال جنگوترا کو ٹھوس شواہد کی عدم دستیابی کی بنا پر بری کر دیا جبکہ آٹھویں نا بالغ ملزم پر بچوں کی عدالت میں مقدمہ چلایا جائے گا۔اخبار لکھتا ہے کہ مقدمہ کے مجرموں میں کمسن بچی کی عصمت دری اور قتل واقعے کے سازشی و سابق سرکاری افسر سانجی رام،اس کا بیٹا وشال جنگوترا،سانجی رام کا نا بالغ بھتیجا،اس کا دوست پرویش کمار،ایس پی او دیپک کھجوریہ و سریندر کمار ،سب انسپکٹر آنند دتا اور ہیڈ کانسٹبل تلک راج شامل ہیں۔استغاثہ نے ان کے لئے سزائے موت کی درخواست کی تھی۔ واضح ہو کہ اس دل دہلا دینے والے واقعے کے بعد پورے ملک میں غم و غصے اور اشتعال کی لہر دوڑ گئی تھی۔

پاکستان کے سابق صدر زرداری بدعنوانی کے مقدمے میں گرفتار

‘‘پاکستان کے سابق صدر آصف زرداری بد عنوانی کے الزام میں گرفتار’’۔یہ سرخی ہےروزنامہ انڈین ایکسپریس کی۔ خبر کے مطابق پاکستان کے انسداد بدعنوانی ادارے نیب نے مقتول وزیر اعظم بے نظیر بھٹو کے شوہر آصف زرداری کو کئی ملین ڈالر کے منی لانڈرنگ مقدمے میں گرفتار کر لیا ہے۔ واضح ہو کہ اس مقدمے نے پورے ملک کو ہلا کر رکھ دیا تھا۔ زرداری اور ان کی بہن فریال تالپور نے اس سے قبل ضمانت قبل از گرفتاری میں توسیع کی درخواست کی تھی جس کو اسلام آباد عدالت نے مسترد کر دیا تھا۔ تا ہم نیب نے فریال تالپور کو گرفتار نہیں کیا اور اس کے پس پشت وجوہ بھی نہیں بتائی ہیں۔اخبار آگے رقمطراز ہے کہ زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور پر درجنوں جعلی بینک اکاؤنٹس رکھنے کا الزام ہے۔پاکستان پیپولز پارٹی کے شریک چیئر مین کی گرفتاری پر ان کے حامیوں نے  ملک کے کئی حصوں میں اہم سڑکوں کو بلاک کر دیا اور پولیس کے ساتھ ان کی جھڑپیں بھی ہوئی ہیں۔

شمالی ہند میں گرمی کا قہر جاری،پالم میں جون کا ریکارڈ درجہ حرارت48 ڈگری سیلسیس

شمالی ہند میں جاری لو اور گرمی کی لہر کے حوالے سے روزنامہ ٹائمز آف انڈیا نے خبر دی ہے کہ دہلی میں پیر کے روز گرمی کی شدت کی وجہ سے ایئر کنڈیشنر بھی ٹھنڈک پہنچانے میں ناکام رہے اور سڑکوں کا کولتار پگھل گیا جبکہ پالم کے علاقے میں درجہ حرارت 48 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا  جو جون کے مہینے میں شہر میں ریکارڈ کئے گئے درجہ حرارت میں سب سے زیادہ ہے۔ روزنامہ لکھتا ہے کہ درجہ حرارت کے لحاظ سے جون کا مہینہ شہر کے مختلف حصوں کے لئے ریکارڈ رہا۔ مئی1998 میں پالم میں درجہ حرارت48 اعشاریہ چار ڈگری سیلسیس تھا۔ اسی طرح صفدر جنگ میں بھی جون کی تاریخ کا سب سے زیادہ درجہ حرارت 45 اعشاریہ چھ ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا جبکہ1994 میں یہ درجہ حرارت46 اعشاریہ دو ڈگری تھا۔ اخبار آگے رقمطراز ہے کہ اسی طرح شہر کے دوسرے حصوں میں ریکارڈ درجہ حرارت پایا گیا۔ جن میں رج کے علاقے میں 47 اعشاریہ نواورآیا نگر میں 47 ڈگری سیلسیس درجہ حرارت ناپا گیا۔ اسی طرح گرو گرام میں درجہ حرارت 46 اعشاریہ آٹھ ڈگری رہا۔

پاکستان میں قائم دہشت گردتنظیموں کا معاملہ:ایف اے ٹی ایف کا صدرمتعین کئے جانے پر چین کی  ہوگی آزمائش

چین پہلی جولائی کو 38 ارکان والی فائنانشیل ایکشن ٹاسک فورس کا صدر بن جائے گا۔ اس کے بعد ہی یہ ثابت ہو سکے گا کہ وہ دہشت گردی کا مقابلہ کرنے کے اپنے عہد کے بارے میں کتنا سنجیدہ ہے۔اس کے حوالے سے روزنامہ ‘‘دی ہندوستان ٹائمز’’ نے ایک خصوصی رپورٹ شائع کی ہے۔اخبار نے توقع ظاہر کی ہے کہ فورس کے موجودہ نائب صدر چین کے شیانگ من لیو ایک سال کے لئے موجودہ صدر امریکہ کے مارشل بلنگس لی کی جگہ لیں گے ۔ جناب لی کی تقرری اس نقطہ نظر سے کافی اہمیت کی حامل ہے کہ اکتوبر میں اپنے مکمل اجلاس میں ٹاسک فورس یہ طے کرے گی کہ آیا پاکستان کو گرے لسٹ (Gray List) میں بر قرار رکھا جائے یا پھر اسے بلیک لسٹ میں شامل کر لیا جائے۔ اگر پاکستان کو بلیک لسٹ میں شامل کر لیا جاتاہے تو پھر اسے زیادہ سخت پابندیوں کا سامنا کرنا ہوگا۔ پاکستان سے کہا گیا ہے کہ وہ دہشت گردی کی مالی معاونت اور منی لانڈرنگ کے خلاف کی گئی کارروائی کی تفصیل ستمبر تک ٹاسک فورس کے حوالے کر دے۔ اس کے بعد  ٹاسک فورس اس بات کا جائزہ لے گی کہ آیا اسلام آباد نےا س کے 27 نکاتی منصوبے پر عمل کیا ہے یا نہیں جس کے بعد چین کی زیر صدارت یہ فیصلہ کیا جائے گا کہ پاکستان کو بلیک لسٹ میں شامل کیا جائے یا گرے لسٹ میں بر قرار رکھا جائے۔ دہشت گردی کی مالی معاونت اور منی لانڈرنگ کے خلاف مناسب کارروائی نہ کرنے کے لئے پاکستان کو گذشتہ جون میں گرے لسٹ میں شامل کیا گیا تھا۔ قابل ذکر ہے کہ پچھلے سال جب پاکستان کو گرے لسٹ میں شامل کیا جانا تھا تو اس بارے میں اتفاق رائے نہیں ہو سکاتھا کیونکہ چین ،ترکی اور خلیج تعاون کونسل نے اس تجویز کی مخالفت کی تھی۔ لیکن بعد میں ان کے ذریعہ اعتراضات واپس لے لئے گئے تو پاکستان کو گرے لسٹ میں شامل کر لیا گیا۔ 20 اور 21 جون کو امریکہ کی صدارت میں فائنانشیل ایکشن ٹاسک فورس کا مکمل اجلاس ہونے والا ہے جس میں پاکستان کی جانب سے دہشت گردی کی مالی معاونت اور منی لانڈرنگ کے خلاف کی گئی کارروائی پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔ لیکن سب سے اہم فیصلہ اکتوبر میں کیاجائے گا جب پاکستان کا دوست اور اتحادی چین اس طاقتور تنظیم کا صدر ہوگا۔