11.07.2019 جہاں نما

 

ہندوستانی فوج پرمسلسل حملوں کیلئے القاعدہ کی دہشت گردوں سے اپیل، پاکستان کو بھی بنایا ہدف تنقید

دہشت گرد تنظیم القاعدہ کے سرغنہ ایمن الظواہری نے ایک ویڈیو جاری کرکے کشمیر میں موجود دہشت گردوں سے کہا ہے کہ وہ ہندوستانی فوج کے خلاف حملے مسلسل جاری رکھیں۔ اس خبر کو تمام اخبارات نے جلی سرخیوں کے ساتھ شائع کیا ہے۔ اس خبر کے حوالے سے روزنامہ دی انڈین ایکسپریس تحریر کرتا ہے کہ الشباب چینل پر ڈونٹ فارگیٹ کشمیر   عنوان سے جاری اس ویڈیو میں الظواہری نے کشمیر کے دہشت گردوں اور عالمی دہشت گرد تنظیموں کے درمیان بہتر رابطوں کی ضرورت پر زور دیا۔ دہشت گردوں سے خطاب کرتے ہوئے اس نے کہا کہ کشمیری عوام کا دکھ ہمارا دکھ ہے اس لئے ہمیں ان کی ہر طرح کی حمایت کیلئے تیار رہنا چاہئے۔ اس نے کشمیر میں موجود دہشت گردوں سے کہا کہ وہ ہندوستانی فوج اور ریاستی حکومت پر مسلسل حملے کرتے رہیں تاکہ ہندوستانی معیشت برباد ہوجائے اور ہندوستان کی افرادی قوت اور آلات کو مسلسل نقصان ہوتا رہے۔ پاکستان کو نشانہ بناتے ہوئے اس نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ پاکستان کی خفیہ ایجنسیاں امریکہ کی چاپلوس ہیں اس لئے وہ بقول اس کے مجاہدین کو ایسا کرنے سے روکیں گی تاکہ وہ ہمیشہ ان کے کنٹرول میں رہیں اور وہ انہیں سیاسی سودے بازی کیلئے استعمال کرتی رہیں۔ اس نے دعویٰ کیا کہ پاکستان نے روس کے افغانستان سے چلے جانے کے بعد عرب مجاہدین کو کشمیر جانے سے روکا تھا۔ اس نے کہا کہ پاکستان مجاہدین کا صرف سیاسی استعمال کررہا ہے۔ 

چار روز قبل بھی انصار الغزوۃ الہند کی جانب سے اسی طرح کاایک ویڈیو جاری کیا گیا تھا۔ وادی کشمیر کی اس دہشت گرد تنظیم  کا تعلق القاعدہ سے ہے۔ اسے پچھلے سال حزب المجاہدین سے الگ ہونے کے بعد ذاکر موسیٰ نے قائم کیا تھا۔ اس ویڈیو میں تنظیم کا سرغنہ حمید لیلہاری   تمام دہشت گردوں کے درمیان اتحاد کی اپیل کرتا ہوا نظر آرہا ہے۔ اس نے یہ بھی اپیل کی کہ دہشت گروں کو اپنی تحریک کو پاک ایجنسیوں کے مقاصد سے الگ کرلینا چاہئے۔ 

 

آئل ٹینکر کو روکنے پر ایران نے برطانیہ کو دیا نتائج کاانتباہ

ایران کے صدر حسن روحانی نے برطانیہ کو متنبہ کیا ہے کہ ایرانی آئل ٹینکر کو جبرالٹر کے ساحل پر قبضہ میں لینے کے سخت نتائج برآمد ہونگے۔ اس خبر کے حوالے سے روزنامہ دی ہندو تحریر کرتا ہے کہ ایرانی کابینہ کی ایک میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم برطانیہ کو بتادینا چاہتے ہیں کہ اس کی وجہ سے سمندروں کی سیکورٹی کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے اور اس کے جو بھی نتائج ہونگے وہ اسے بھگتنے پڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ٹینکر کو اپنے قبضہ میں لیکر برطانیہ نے بے وقوفی کا مظاہرہ کیا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ جمعرات کے روز برطانیہ نے تیل سے بھرے ایک ایرانی آئل ٹینکر کو اپنے قبضہ میں لے لیا تھا۔ اسی دوران تہران نے کہا ہے کہ وہ 2015 کے نیوکلیائی معاہدے کو بچانے کیلئے فرانس کی کوششوں کا خیرمقدم کرتا ہے۔ روزنامہ دی انڈین ایکسپریس اس خبر کے حوالے سے تحریر کرتا ہے کہ فرانسیسی صدر ایمینول میکرون  کے ایک اعلیٰ سفارتی مشیر نے جوہری معاہدے سے پیدا بحران پر بات چیت کرنے کیلئے بدھ کے روز تہران کا دورہ کیا۔ دورہ کے اختتام پر وزارت خارجہ کے ترجمان عباس موسوی نے کہا کہ ایران فرانس کی اس کوشش کی ستائش کرتا ہے۔ غور طلب ہے کہ ایران نے پیر کے روز یورینیم افزودگی کی سطح 20 فیصد تک بڑھانے کی دھمکی دی تھی۔ تہران معاہدے پر دستخط کرنے والے یوروپی ممالک پر زور دیتا رہا ہے کہ وہ امریکی پابندیوں سے اسے بچانے کیلئے مناسب اقدامات کریں۔ 

 

صدر ٹرمپ سے اختلاف کے بعد برطانوی سفیر مستعفی

سرکاری ای میلز میں امریکی صدر ڈونل ٹرمپ کو ہدف تنقید بنانے والے امریکہ میں برطانوی سفیر کِم ڈیروچ   نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دیدیا ہے۔ اس خبر کو تمام اخبارات نے جلی سرخیوں کے ساتھ شائع کیا ہے۔ روزنامہ دی اسٹیٹس مین تحریر کرتا ہے کہ مستعفی ہونے کے بعد جناب ڈیروچ نے کہا کہ موجودہ صورتحال  کی وجہ سے اپنی ذمہ داری نبھانا میرے لئے بہت مشکل تھا اس لئے مجھے یہ قدم اٹھانا پڑا۔ ادھر برطانوی دفتر خارجہ نے ڈیروچ کے استعفیٰ کی تصدیق کردی ہے۔ استعفیٰ پر اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے وزیراعظم ٹریسامے نے کہا یہ بڑے افسوس کی بات ہے کہ جناب ڈیروچ کو استعفیٰ دینا پڑا۔ غور طلب ہے کہ  چند روز قبل برطانوی اخبار میں کِم ڈیروچ کی افشا ہونے والی ای میلز شائع ہوئی تھیں جس میں صدر ٹرمپ کو کند ذہن ، نااہل اور ناکارہ کہا گیا تھا جبکہ امریکہ کو ایک غیرمحفوظ ملک اور امریکی پالیسیوں کو غیریقینی قرار دیا گیا تھا۔ لیک ہونے والی ای میلز پر امریکی صدر نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے برطانوی سفیر کو احمق قرار دیا تھا اور ان کے ساتھ مزید کام کرنے سے انکار کردیا تھا۔ تاہم برطانوی وزیر اعظم نے اپنے سفیر کو مکمل حمایت کا یقین دلاتے ہوئے کام جاری رکھنے کی ہدایت دی تھی۔ جس پر امریکی صدر نے وزیراعظم  مے کو بھی ہدف تنقید بنایاتھا اور بریگزٹ پر ناکامی کا ذمہ دار بھی انہیں کو ٹھہرایا تھا۔ گزشتہ ماہ ارسال کردہ پیغام میں برطانوی سفیر نے ایران سے متعلق امریکی پالیسی کو بھی غیر مربوط اور خلفشار کا شکار قرار دیا تھا۔ 

 

پاکستان میں قصوروار یا زیر سماعت سیاستدانوں کی میڈیا کوریج پر پابندی

پاکستان نے سیاسی رہنماؤں کے انٹرویو اور میڈیا کوریج کے معاملے میں ایک بڑا فیصلہ لیا ہے۔ اس فیصلے کے تحت  ایسے لیڈروں کا نہ تو انٹرویو لیا جائے گا اور نہ ہی انہیں میڈیا کوریج دی جائے گی جو کسی نہ کسی معاملہ میں قصوروار ہیں یا زیر سماعت قیدی ہیں۔ اس خبر کے حوالے سے روزنامہ دی انڈین ایکسپریس تحریر کرتا ہے کہ پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری  اتھارٹی کو بھی الیکٹرانک میڈیا پر ہونے والے ایسے پروگراموں کی حمایت نہ کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ حالانکہ حکومت نے اتھارٹی کو کسی بھی نجی ٹی وی چینل کو بند کرنے کی ہدایت نہیں دی ہے۔ وزیراعظم عمران خان کی صدارت میں منگل کو ہوئی کابینہ کی میٹنگ میں یہ فیصلہ لیا گیا۔ میٹنگ میں سابق صدر آصف علی زرداری اور سابق وزرائے اعظم نواز شریف اور شاہد خاقان عباسی کے غیرملکی دوروں کے اعداد وشمار کا اعلان بھی کیاگیا۔ واضح رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کی بیٹی مریم نواز کی پریس کانفرنس کی کوریج پر تین ٹی وی چینلوں کی نشریات معطل کردی گئی تھیں۔ ان چینلوں کی نشریات 19 گھنٹے سے زیادہ عرصے تک معطلی کے بعد بحال تو ہوگئیں تاہم چینلوں کی انتظامیہ کا کہنا تھا کہ وہ نہیں جانتے کہ نشریات کیوں اور کس کی ہدایت پر معطل ہوئی تھیں۔ اسی دوران کراچی میں ایک معروف ٹی وی چینل کے اینکر مرید عباس کو گولی مار کر ہلاک کردیا گیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق ان کی کسی سے ذاتی رنجش تھی۔ 

 

سری لنکا اور امریکہ کے درمیان فوجی تعاون کیلئے نئے معاہدے پر بات چیت جاری، وزیراعظم کا بیان

سر ی لنکا امریکہ کیساتھ فوجی تعاون کے بارے میں ایک نئے معاہدے پر بات چیت کررہا ہے۔ اس بات کا اعلان کل وزیراعظم رانیل وکرما سنگھے نے پارلیمنٹ میں کیا۔ اس خبر کو روزنامہ ٹائمز آف انڈیا نے جلی سرخی کے ساتھ شائع کیا ہے۔ اخبار تحریر کرتا ہے کہ جناب وکرما سنگھے نے کہا کہ ان کی حکومت 1995 کے اسٹیٹس آف فورسیز ارینجمنٹ   کی جگہ ایک نئے معاہدے پر بات چیت کررہی ہے جس سے امریکی فوجوں کی سری لنکا کے اسٹریٹیجک طور واقع جزیروں تک رسائی آسان ہوجائے گی۔ جناب وکرما سنگھے کا یہ بیان صدر میتری پالا سری سینا کے اس بیان کے بعد آیا ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ وہ کسی بھی ایسے معاہدے کی اجازت نہیں دیں گے جس سے امریکی فوجوں کی سری لنکا تک رسائی آسان ہوجائے۔ انہوں نے کہا تھا کہ کچھ غیر ملکی طاقتیں سری لنکا میں اپنے فوجی اڈے بنانا چاہتی ہیں لیکن ہم انہیں ایسا نہیں کرنے دیں گے۔ جناب وکرما سنگھے نے اس بات سے انکار کیا کہ امریکہ کے ساتھ کسی بھی نئے معاہدے سے امریکی فوجوں کی موجودگی مستقل ہوجائے گی۔ انہوں نے کہا کہ امریکی بحریہ مچھلی پکڑنے والی کشتیاں نہیں ہیں۔ انہیں سری لنکا میں کسی اڈے کی قطعی ضرورت نہیں ہے۔ جہاں تک امریکہ کا تعلق ہے تو سری لنکا کو لیکر اس کی تشویشات بڑھ گئی ہیں کیونکہ اس جزیرہ نما ملک کی بندرگاہوں اور دوسرے پروجیکٹوں میں چین کی سرمایہ کاری میں کافی اضافہ ہوگیا ہے۔ 

 

ہندوستان کو ہراکر نیوزی لینڈ عالمی کپ کرکٹ کے فائنل میں

عالمی کپ کرکٹ کے سیمی فائنل میں بھارت کو ہراکر  نیوزی لینڈ نے فائنل میں جگہ بنالی ہے۔ اس خبر کو تمام اخبارات نے اپنے کالموں میں خاص جگہ دی ہے۔ اس خبر کے حوالے سے روزنامہ انقلاب تحریر کرتا ہے کہ اب تک شاندار کارکردگی سے شائقین کا دل جینتے والی ہندوستانی ٹیم کے ٹاپ آرڈر  کے بلے بازوں نے سیمی فائنل میں انتہائی ناقص کارکردگی کا مظاہرہ کیا جس سے کروڑوں ہندوستانی شائقین کا دل ٹوٹ گیا۔ نیوزی لینڈ نے کل بارش سے متاثرہ پہلے سیمی فائنل میں ہندوستان کو 18 رنوں سے شکست دے کر مسلسل دوسری مرتبہ آئی سی سی عالمی کپ کے فائنل میں داخلہ حاصل کرلیا۔ جبکہ ہندوستانی ٹیم مسلسل دوسری مرتبہ سیمی فائنل میں ہی باہر ہوگئی۔ 14 جولائی کو ہونے والے فائنل میچ میں نیوزی لینڈ کامقابلہ میزبان انگلینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان آج ہورہے دوسرے سیمی فائنل کی فاتح ٹیم سے ہوگا۔ واضح رہے کہ منگل کو نیوزی لینڈ نے 46 اوور اور ایک گیند میں پانچ وکٹ پر 211 رن بنائے تھے۔ بدھ کو میچ دوبارہ وہیں سے شروع ہوا اور نیوزی لینڈ نے مقررہ 50 اوورز میں آٹھ وکٹ پر 239 رن بنائے۔ جیت کیلئے ہندوستان کو مقررہ 50 اوورز میں 240 رنوں کی ضرورت تھی لیکن اس کی پوری ٹیم صرف 221 رنوں پر ہی آؤٹ ہوگئی۔ رویندر جڈیجہ نے سب سے زیادہ 77 اور مہندر سنگھ دھونی نے 50 رن اسکور کئے۔