05.06.2020

 

ہند آسٹریلیا کے درمیان اسٹریٹجک تعلقات کو وزارتی سطح تک بڑھانے پر اتفاق

۔ آج ملک کے تمام اخبارات نے  اسٹریٹجک مذاکرات کو وزارتی سطح تک لے جانے کے لئے ہند اور آسٹریلیا کے درمیان اتفاق رائے کی خبروں کو شہ سرخیوں کے ساتھ شائع کیا ہے۔ روزنامہ انڈین ایکسپریس نے اپنی خبر میں تحریر کیا ہے کہ دونوں ملکوں نے 2009 میں طے شدہ اپنی اسٹریٹجک پارٹنر شپ کے درجے کو آگے بڑھاتے ہوئے، فیصلہ کیا ہے کہ متعلقہ خارجہ سکریٹریوں کے درمیان  موجودہ ٹو پلس ٹو ڈائیلاگ کووزارتی سطح تک لے جایا جائے۔ اس کے نتیجے میں اہم سیاسی تعلقات کو باہمی طریقۂ کار تک لے جانے میں مدد ملے گی اور اس سے دونوں ممالک کے درمیان ٹو پلس ٹو وزارتی سطح کے مذاکرات کو امریکہ اور جاپان کے ساتھ ہندوستان کے موجودہ ڈائیلاگ کے برابر لانے میں مدد ملے گی۔وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کے آسٹریلیائی ہم منصب اسکاٹ موریسن کے درمیان ورچوئل سربراہ کانفرنس کے بعد جاری مشترکہ بیان کے حوالے سے اخبار لکھتا ہے کہ ہر دو سال میں ملاقات کے دوران، دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ اور  دفاع کے درمیان ٹو پلس ٹو فارمیٹ میں اسٹریٹجک امور پر تبادلۂ خیال ہوگا۔ حکام کا کہنا ہے کہ دونوں رہنماؤں کے درمیان ایل اے سی پر جاری کشیدگی کے بارے میں تو کوئی بات نہیں ہوئی لیکن بیجنگ پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے طرفین نے ہند۔بحرالکاہل علاقے میں بحری تعاون کےلئے ایک خاکے کا اعلان کیا تاکہ جامع اسٹریٹجک شراکت داروں کے بطور چیلنجوں سے نپٹا جاسکے۔اخبار مزید رقم طراز ہے کہ دونوں ممالک نے متوقع میوچوئل لاجسٹکس سپورٹ ایگریمنٹ پر بھی دستخط کئے جس کے تحت ایک دوسرے کے اڈوں کا استعمال کیا جاسکے گا اور دفاعی مشقوں کے ذریعے ملٹری انٹر آپریبلٹی میں اضافہ کیا جاسکے گا۔خیال رہے کہ امریکہ، فرانس، سنگا پور اور جنوبی کوریا کے ساتھ ہندوستان کے اس طرح کے معاہدے پہلے ہی سے موجود ہیں۔حالانکہ مالابار مشقوں میں آسٹریلیا کی شمولیت کے بارے میں کوئی مخصوص تجویز نہیں تھی، پھر بھی جانبین نے اپنی فوجی مشقوں میں اضافے کے ذریعے دفاعی تعاون کو توسیع دینےکے اقدامات جاری رکھنے کا فیصلہ کیا تاکہ سلامتی کے مشترکہ چیلنجوں سے نپٹا جاسکے۔

 

ویکسین الائنس گاوی کے لئے ہندوستان نے کیا 15 ملین ڈالر عطیے کا اعلان

۔ ہندوستان نے بین الاقوامی ویکسین اتحاد، گاوی کے لئے 15 ملین ڈالر عطیے کا اعلان کیا ہے۔ اس حوالے سے روزنامہ ہندو لکھتا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا ہے اس مشکل دور میں ان کا ملک، دنیا کے شانہ بشانہ کھڑا ہے۔ وہ  برطانوی وزیر اعظم بورس جونسن کے ذریعے منعقدہ گلوبل ویکسین سربراہ کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ ایک سرکاری بیان میں کہا گیا ہے کہ 50  ممالک کے سربراہان مملکت، وزراء، تجارتی رہنماؤں، اقوام متحدہ کے اداروں اور سول سوسائٹی سے خطاب کرتے ہوئےنریندر مودی نے کہا کہ ہندوستان کی تمدنی تعلیمات  میں ہمیں درس دیا گیا ہے کہ دنیا کو ایک خاندان کے بطور دیکھا جائے اور کووڈ چیلنج کے دوران، ان کے ملک نے ان تعلیمات پر کھرا اترنے کی پوری کوشش کی ہے۔ اپنے خطاب میں وزیر اعظم نے مزید کہا کہ ہندوستان نے  اپنے عوام کے تحفظ کے ساتھ ساتھ، 120  ممالک کے ساتھ اپنی دواؤں کےذخیرے کا اشتراک کیا ہے، اس نےاپنے قریبی پڑوسی ممالک  کے ساتھ روک تھام کی ایک مشترکہ حکمت عملی تیار کہ ہے اور ضرورت مند ممالک کو خصوصی مدد فراہم کی ہے۔ اخبار ان کے خطاب کے حوالے سے آگے لکھتا ہے کہ گاوی نہ صرف ایک عالمی اتحاد ہے بلکہ بین الاقوامی یکجہتی کی علامت بھی ہے۔ہندوستان، ویکسین تیار کرنے والے اہم ملکوں میں شامل ہے اور یہ اس کی خوش قسمتی ہے کہ وہ دنیا کے 60 فی صد بچوں کی ٹیکا کاری میں مدد دے رہا ہے۔ ان کا ملک گاوی کی خدمات کوبے حد اہمیت دیتا ہے۔

 

ہند چین مذاکرات میں تین علاقوں پر ہوگی توجہ 

۔ سرحدی کشیدگی کو دور کرنے کے لئے، ہندوستان اور چین کے لفٹننٹ جنرلوں کے درمیان اس ہفتے کے آخر میں پہلے مذاکرات کے دوران مشرقی لداخ کے گلوان، پینگانگ ٹسو اور گوگرا علاقوں پر توجہ مرکوز کی جائے گی۔ رونامہ ہندو نے  دفاع کے ذرائع کے حوالے سے خبر دی ہےکہ بات چیت کے ایجنڈے میں اپنی فوجوں کو 5 مئی کی پوزیشن پر واپس لے جانے اور چین کے ذریعے فوجوں کی واپسی شامل ہوگی۔ یہ بات چیت سرحد کے اس پار چین کی جانب چشول مولدو پارڈر پوائنٹ پر ہوگی اور ہندوستانی وفد کی نمائندگی لیہہ ہیڈ کوارٹر میں تعینات جنرل آفیسر کمانڈنگ کریں گے۔ 

 

جموں کشمیر میں ایک دہشت گرد ہلاک

۔ روزنامہ ہندوستان ٹائمس کی ایک خبر کے مطابق،  جموں و کشمیر میں سلامتی دستوں نے جمعرات کو دیر رات گئے ایک جھڑپ میں ایک دہشت گرد کو ہلاک کردیا۔ راجوری ضلع کے کالاکوٹ علاقے میں خفیہ ذرائع کی اطلاعات پر یہ کارروائی انجام دی گئی۔خبر ملنے تک، دو سے تین مزید ملٹنٹوں کے وہاں چھپے ہونے کا اندیشہ تھا۔ ایک مقامی شخص کا کہنا ہے کہ  سلامتی افواج اور  دہشت گردوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا تھا جس کے دوران یہ دہشت گرد مارا گیا۔ اس کے علاوہ، سلامتی دستوں نے نزدیکی پونچھ ضلع کے میندھر علاقے میں بھی تلاشی کی کارروائی انجام دی۔ اخبار مزید لکھتا ہے کہ کووڈ۔19 کے لاک ڈاؤن کے دوران، جموں و کشمیر میں دہشت گردانہ حملوں اور دراندازی کی کوششوں میں اچانک اضافہ ہوا ہے۔ اس کے علاوہ جمعرات کے روز، پاکستانی رینجرس کے ذریعے فائرنگ سے بچنے کے لئے گاؤں والوں کو اِدھر اُدھر بھاگنا پڑا۔ رینجروں نے ہیرا نگر سیکٹر کے کٹھوعہ ضلع میں ہلکے اور میڈیم درجے کے ہتھیاروں سے شہری علاقوں کو نشانہ بنایا تھا۔اس فائرنگ میں تقریباً ایک درجن مکان تباہ ہوئے ہیں۔

 

مدھیہ پردیش میں ایک پاکستانی شہری گرفتار، قبضے سے غیر قانونی پان مسالہ برآمد

۔ روزنامہ ہندو کی ایک خبر کے مطابق، جی ایس ٹی انٹلی جنس کی ڈائریکٹوریٹ جنرل نے مدھیہ پردیش کے اندور ضلع میں ایک پاکستانی شہری کو گرفتار کیا ہے۔اس کے قبضے سے دو کروڑ 95 لاکھ روپئے مالیت کا غیر قانونی پان مسالہ، تمباکو اور نقد رقم پرآمد کی گئی ہے۔ ملزم طویل مدتی ویزا پر ہندوستان میں قیام پذیر تھا۔ خیال رہے کہ 25 مارچ سے، کووڈ۔19 کی روک تھام کے سلسلے میں اس طرح کی اشیاء کی فروخت پر پابندی عائد ہے۔ ایک عہدیدار کے مطابق، اندور میں معاشی جرائم سے متعلق ونگ کی عدالت نے ملزم کو 17 جون تک، 14 دن کے ریمانڈ کا حکم دیا ہے۔

 

امریکہ میں دفاعی رہنماؤں نے فوج بھیجنے کے لئے ٹرمپ کی تجویز کی مسترد

۔ ‘‘ دفاعی رہنماؤں نے فوج بھیجنے کے لئے ٹرمپ کی تجویز کی مسترد۔’’ امریکہ میں جاری فسادات کے حوالے سے یہ سرخی ہے روزنامہ انڈین ایکسپریس کی۔ خبر میں بتایا گیا ہے کہ سابق وزیر دفاع جیمس میٹس نے امریکی صدر ڈونل ٹرمپ کی تجویز سے واضح طور پر عدم اتفاق کرتے ہوئے بدھ کے روز ان لوگوں کی حمایت کی ہے جو سیاہ فام امریکی جارج فلائیڈ کی موت کے خلاف وہائٹ ہاؤس کے باہر احتجاج کررہے ہیں۔ اخبار لکھتا ہے کہ میٹس، احتجاجیوں سے نپٹنے کے لئے ٹرمپ کے طریقۂ کار اور  شورش کے خاتمے کے لئے فوج کی تعیناتی کی دھمکی سے اختلاف کرتے ہوئے ان موجودہ اور سابقہ رہنماؤں کی صف میں شامل ہوگئے ہیں جو کھلم کھلا ٹرمپ پر تنقید کررہے ہیں۔ ان کے الفاظ میں، ڈونالڈ ٹرمپ ان کی زندگی میں وہ پہلے صدر ہیں جو امریکی عوام کو متحدنہ کرنے بلکہ تقسیم کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ اخبار لکھتا ہے کہ ان کے اس بیان سے چند گھنٹے قبل، پنٹاگن میں ان کے جانشین مارک ایسپر نے ، احتجاجیوں کے خلاف فوج کے استعمال کی دھمکی سے اپنے آپ کو الگ تھلگ کرنے کی کوشش کی تھی۔ انھوں نے کہا تھا کہ وہ انسرکشن ایکٹ   کی حمایت نہیں کرتے ہیں۔ ان کے اس بیان سے ملک کے اندر فوج کی تعیناتی کے لئے 200 سال پرانے قانون کے استعمال کے لئے ٹرمپ کی تجویز کی واضح مخالفت کا اظہار ہوتا ہے۔

 

معروف فلم ساز باسو چٹرجی کا انتقال

۔ فلمی دینا کی مشہور شخصیت اور معروف فلم ساز باسو چٹرجی کا طویل بیماری کے بعد 93سال کی عمر میں کل انتقال ہوگیا۔  1974 میں فلم رجنی گندھا، اور 1975 میں فلم چھوٹی سی بات جیسی تخلیقات کے لئے ایک الگ شناخت رکھنے والے تجربہ کار اور اسکرین پلے رائٹر نے ہندی سنیما کے علاوہ بنگالی فلموں کی بھی ہدایت کاری کی تھی۔ ان کی دیگر فلموں میں پیا کا گھر، باتوں باتوں میں، شوقین، ایک رکا ہوا فیصلہ اور چمیلی کی شادی کافی مشہور ہیں۔ بنگالی زبان میں انھوں نے  ہوتھاٹھ برشٹی، ہو چیتا کی اور ہو تھاٹھ شیائی دن جیسی فلمیں بنائی تھیں۔ ان کی فلمیں حقیقت سے کافی قریب ہوا کرتی تھیں۔