04.08.2020

افغانستان میں جلال آباد جیل پر آئی ایس کا حملہ، 26 افراد ہلاک، سیکڑوں قیدی فرار

افغانستان کے جلال  آباد شہر کی جیل پر ملٹنٹوں کے حملے میں کم از کم 29  افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ اس حوالے سے روزنامہ ہندو لکھتا ہے کہ آخری خبریں ملنے تک جیل میں لڑائی جاری تھی جہاں آئی ایس اور طالبان کے تقریباً ایک ہزار 700 کارکن قیدہیں۔ جلال آباد میں ننگرہار کے گورنر کے ترجمان  کا کہنا ہے کہ حملے کے ایک دن بعدبھی مسلح افراد جیل میں چھپے ہوئے ہیں۔ اور مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوسکتا ہے۔آئی ایس کی خبر رساں ایجنسی عمق کا کہنا ہے کہ پیر کے روز کئے گئے اس حملے کے پس پشت اس کے جنگجو ہیں جس کے دوران اس کے سیکڑوں کارکن فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے جبکہ بہت سے قیدیوں کو دوبارہ گرفتار کرلیا گیا۔اخبار کے مطابق،تازہ حملہ، عیدالاضحیٰ کے موقع پر تین روزہ جنگ بندی کے بعد سے مہلک ترین پرتشدد واقعہ ہے۔واضح ہو کہ آئی ایس اس جنگ بندی میں شامل نہیں تھی۔ جس کے بارے میں افغان حکام کا خیال ہے کہ اس سے جلد از جلد اس ہفتے ہونے والے پرامن مذاکرات کی راہ ہموار ہوگی۔کابل حکومت اور طالبان دونوں نے اشارہ دیا تھا کہ وہ عید کے بعد مذاکرات کے لئے تیار ہیں اور کابل نے اتوار کے روز جنگ بندی میں توسیع کی پیش کش کی تھی۔ لیکن اس بات چیت میں سب سے بڑی رکاوٹ قیدیوں کا متنازعہ تبادلہ ہے جس پر امریکہ اور طالبان نے اتفاق  کیا تھا اورجس کے تحت کابل حکومت کو 5000 طالبان قیدیوں کو اور طالبان کو 1000 افغان سلامتی اہلکاروں کو رہا کرنا تھا۔لیکن افغان حکام نے ان سیکڑوں طالبان قیدیوں کو رہا کرنے سے انکار کردیا ہے جن پر سنگین جرائم کا الزام ہے۔

پاکستان ہائی کورٹ نے جادھو کے لئے وکیل مقرر کرنے کی دی اجازت

اخبارات کی دوسری خبروں میں ہندوستانی بحریہ کے سابق افسر کلبھوشن جادھو سے متعلق خبر بھی شامل ہے جس کے مطابق، اسلام آباد ہائی کورٹ نے حکومت پاکستان کو ہدایت دی ہے کہ وہ جادھو کے لئے وکیل مقرر کرنے کے سلسلے میں ہندوستان کو مطلع کرے۔ دو رکنی بنچ نے حکومت پاکستان سے یہ بھی کہا کہ ویانا کنونشن کے تحت قونصل رسائی سے متعلق حاصل حقوق سے بھی ایک بار پھرجادھو کو مطلع کیا جائے۔پاکستان کے اٹارنی جنرل خالد جاوید خاں نے پیر کے روز سماعت کے بعد نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ عدالت نے اپنے حکم میں کہا ہےکہ جادھو کو وکیل مقرر کرنے کا دوبارہ موقع دیا جانا چاہئے۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ آیاکوئی ہندوستانی وکیل جادھو کی جانب سے عدالت میں پیش ہوسکتا ہے تو انھوں نے کہا کہ صرف پاکستانی وکیل کو ہی جو پاکستان میں پریکٹس کرنے کا مجاز ہو، جادھو کا وکیل مقررکیا جاسکتا ہے۔ ایک دوسرے سوال کے جواب میں  ہندوستانی وکلاء، جادھو کے لئے مقرر کردہ پاکستانی وکیل کی مدد کرسکتے ہیں، تو انھوں نے کہا کہ ابھی تک اس متبادل پر غور نہیں کیا گیا ہے۔اخبار آگے لکھتا ہے کہ ابھی تک اس پر ہندوستانی حکومت کا کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔

جموں و کشمیر میں کنٹرول لائن پر پاکستانی فوج کی بلااشتعال فائرنگ

آل انڈیا ریڈیو کی خبروں کے مطابق، مرکز کے زیر اہتمام علاقے، جموں و کشمیر کے پونچھ ضلع میں کنٹرول لائن پر کرشنا گھاٹی سیکٹر میں پاکستانی فوجیوں نے ہلکے ہتھیاروں اور مورٹروں سے بلا اشتعال اور اندھا دھند گولہ باری کی۔ وزارت دفاع کےرابطہ عامہ افسر کرنل دیوندر سنگھ کا کہنا ہے کہ آج منگل کی صبح پاکستانی دستوں نے پہلے ہلکے ہتھیاروں سے اور پھر بھاری مورٹر گولہ باری کے ذریعے جنگ بندی کی خلاف ورزی کی جس کا ہندوستانی فوجیوں نے منہ توڑ جواب دیا۔ پاکستانی فوجیوں کی جانب سے کی گئی اس فائرنگ کے نتیجے میں کسی جانی یا مالی نقصان کی اطلاع نہیں ملی ہے۔

فرانس نے ہانگ کانگ کے ساتھ حوالگی معاہدے کی توثیق کی معطل

فرانس نے کہا ہے کہ وہ چین کے متنازعہ قومی سلامتی قانون کی وجہ سے ہانگ کانگ کے ساتھ حوالگی کا معاہدے کی توثیق معطل کررہا ہے۔ اس حوالے سے روزنامہ ہندوستان ٹائمس نے خبر دی ہے کہ اس سے چند گھنٹے قبل بیجنگ حکومت نے نیوزی لینڈ کے ساتھ اسی طرح کا معاہدہ معطل کیا تھا۔ خیال رہے کہ فرانس اور ہانگ کانگ اسپیشل ایڈمنسٹریٹو ریجن کے درمیان یہ معاہدہ 4 مئی 2017 کو طے پایا تھا۔ اس سے قبل کناڈا، برطانیہ، آسٹریلیا اور جرمنی بھی، جون کے اواخر میں چین کے متنازعہ قانون کی وجہ سے ہانگ کانگ سے حوالگی معاہدے معطل کرچکے ہیں۔ جس کے جواب میں چین نے بھی انپے اندرونی معاملات میں مداخلت کا الزام لگاتے ہوئے کناڈا، برطانیہ اور آسٹریلیا کے ساتھ اپنے حوالگی معاہدے معطل کردیئے تھے۔ اخبار  تجزیہ کاروں کے حوالے سے مزید لکھتا ہے کہ  اس قانون سے برطانیہ کی سابق نوآبادیات میں شہریوں کے حقوق اور حقوق انسانی پامال ہوں گے۔ واضح ہو کہ نیوزی لینڈ نے ہانگ کانگ کے خلاف فوجی اور دوہری برآمدات پر بھی پابندیاں سخت کردی ہیں۔

امریکہ چینی سائنسدانوں کے خلاف  ہراسانی کا سلسلہ بند کرے: بیجنگ

  ‘‘امریکہ چینی سائنسدانوں کے خلاف  ہراسانی کا سلسلہ بند کرے: بیجنگ’’ یہ سرخی ہے روزنامہ راشٹریہ سہارا کی۔ خبر کے مطابق، چین نے وہائٹ ہاؤس انتظامیہ کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ چینی، سائنس دانوں ، محققین اور طلباء کو ہراساں کرنے کا سلسلہ بند کرے اور تمام گرفتار شدگان کو فوری طور پر رہا کرے۔ اخبار نے عالمی خبر رساں ادارے کے حوالے سے تحریر کیا ہے کہ چین کی وزارت خارجہ کے ایک بیان میں الزام عائد کیا گیا ہے کہ  امریکہ میں چینی طلباء اور محققین کی سخت نگرانی کی جارہی ہے اور انھیں مسلسل ہراساں کیا جارہا ہے جب کہ تین محققین کو غیر قانونی طور پر حراست میں بھی رکھا گیا ہے۔ اخبار کے مطابق، چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ ریاست کیلی فورنیا میں ایک چینی نژاد محقق یو آن ٹینگ کی ضمانت پر رہائی کی درخواست کو بھی حال ہی میں مسترد کردیا گیا ہے جس سے امریکہ کے عزائم کھل کر سامنے آگئے ہیں  نیز یہ کہ چین اپنے طلباء اور محققین کی حفاظت کے لئے ہر ضروری قدم اٹھائے گا۔

امریکہ نے ہانگ کانگ قانون ساز اسمبلی انتخابات کے التویٰ پر کی تنقید

اسی اخبار کی ایک اور خبر کے مطابق، ہانک کانگ میں 6 ستمبر کو قانون ساز اسمبلی کے انتخابات ہونے تھے جن کو کورونا وائرس وبا کی وجہ سے ایک سال کے لئے معطل کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔ اس اعلان پر تنقید کرتے ہوئے، وزیر خارجہ مائیک پامپیو نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایک طویل عرصے کے لئے ان انتخابات کے التویٰ کی کوئی حقیقی وجہ موجود نہیں ہےاور اگر یہ انتخابات ہانگ کانگ کے عوام کی خواہشات کے مطابق نہ ہوئے تو یہ نیم خود مختار شہر بھی چین میں کمیونسٹ  پارٹی کے زیر اہتمام دیگر شہروں کی طرح ہوجائے گا۔اخبار کے مطابق، مائیک پامپیو نے انتخابات کے التویٰ کو قابل افسوس قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے واضح ہوتا ہے کہ چین 1997 میں برطانیہ سے اقوام متحدہ کی نگرانی میں ہونے والے معاہدے کہ پاسداری نہیں کرنا چاہتا۔دوسری جانب بیشتر مبصرین اس اقدام کو ہانگ کانگ کے جمہوریت پسندوں کو کنارے لگانے کی کوشش قرار دے رہے ہیں کیوں کہ امکان تھا کہ ان انتخابات میں جمہوریت پسندوں کو مزید کامیابی مل سکتی تھی۔

نوبیل امن انعام یافتہ جون ہیوم کا 83 برس کی عمر میں انتقال

اخبار انڈین ایکسپریس نے اطلاع دی ہے کہ 1998 میں شمالی آئر لینڈ کے گڈ فرائیڈے امن معاہدے کے خالق رومن کیتھولک جان ہیوم کا پیر کے روز انتقال ہوگیا۔ ان کی عمر 83 برس تھی۔ 30 برس طویل مسلکی جنگ کے خاتمے میں اہم خدمات کے اعتراف میں جان ہیوم کو نوبیل انعام  سے سرفراز کیا گیا تھا۔ ہیوم نے 1968 میں آئرش رومن کیتھولک اقلیت کے لئے شہری حقوق کی ایک مہم میں شمولیت اختیار کی تھی اور رہائش سے لے کر تعلیم تک ہر شعبے میں برٹش حامی پروٹسٹنٹ اکثریت کے ذریعے تفریق کی مخالفت کی تھی۔

ناسا اور اسپیس ایکس ڈریگن نے تاریخ رقم کی

روزنامہ راشٹریہ سہارا کی ایک خبر کے مطابق، ناسا اور اسپیس ایکس ڈریگن کریو کیپسول اینڈیور نے اتوار کے روز خلیج میکسیکو میں لینڈ کرکے تاریخ رقم کردی۔ اسپیس ایکس نے اپنے ٹوئیٹر ہینڈل پر اس سے متعلق ایک ویڈیو جاری کی ہے جس میں ناساکے دو خلابازوں کو اسپلیش ڈاؤن یعنی پیرا شوٹ سے اترنے کا مظاہرہ کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ امریکی صدر ڈونل ٹرمپ نے ڈریگن کریو اینڈیور کی بحفاظت واپسی کی تعریف کی اور سب کا شکریہ ادا کیا۔ ناسا کے خلا باز دو ماہ کے مشن کے بعد زمین پر واپس آئے ہیں۔